بنیادی صفحہ / صوبائی / اہل مدارس تعلیم کے ساتھ سماج کو صحیح سمت بھی دیں

اہل مدارس تعلیم کے ساتھ سماج کو صحیح سمت بھی دیں

Print Friendly, PDF & Email

دارالعلوم نور المعارف میں جلسہ دستار بندی سے مفتی افتخاراحمد قاسمی کا خطاب
بنگلورو،(بھٹکلیس نیوز)
اس وقت ملک سلگ رہا ہے ، مسلمانوں کو ہر چہار جانب سے آزمائش کا سامنا ہے ،مسلم سماج کی دینی تعلیم سے دوری اور جہالت ملت کو رسوا کر رہی ہے ، ایسے میں اہل مدارس اور علماء کی ذمہ داری ہے کہ وہ مسلمانوں کو بنیادی دینی تعلیم سے روشناس کر نے کے ساتھ ان کی ہر محاذ پر رہنمائی فر مائیں ۔ ان خیالات کا اظہار اتوار کو دیر رات دارالعلوم نور المعارف الال اپ نگر بنگلور کے جلسہ دستار بندی سے خطاب کر تے ہوئے مولانا ومفتی افتخار احمد قاسمی صدر جمعیۃ علماء کرناٹک نے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ مدارس کے احباب حفاظ ضرور تیار کریں ،لیکن ساتھ ہی سماج کی بے دینی دور کرنے اور ان میں شعور پید ا کرنے کے لئے مکاتب قائم کریں اور وہ لازمی تعلیم دیں جس سے ہر ایک مسلم بچہ ایمانی زندگی گزار سکے ۔اس موقع پر مولانا جمیل احمد قاسمی خطیب سبحانیہ مسجد گوری پالیہ نے قرآن پاک کے نزول کے پس منظر کو بیان کرتے ہوئے حفاظ کرام کی اہمیت اور فضیلت پر روشنی ڈالی ۔انہوں نے کہا کہ قرآن پاک کی نسبت ہو نے سے یہ معصوم بچے عظمت والے ہو گئے ہیں ،ہمیں ان کا احترام کرنا چاہئے ۔پروگرام کا باضا بطہ آغاز قاری شہنوازعالم کی تلاوت کلام پاک سے ہوا ۔ نعت پاک کا نذرانہ مولانا عمر فاروق اور مولانا سبیل احمد نے پیش کیا۔ استقبالیہ کلمات مولانا وصال احمد قاسمی معتمد دارالعلوم نور المعارف نے پیش کئے ۔پروگرام کی نظامت کرتے ہوئے مدرسہ کے بانی مفتی عبد الواحد قاسمی رحمانی نے کہا کہ مختصر سی مدت میں اس ادارہ نے کامیابی کے جو مراحل طے کئے ہیں وہ اکابر کی دعاؤ ں اور مخلصین کی کوششو ں کا نتیجہ ہے۔خیال رہے کہ علماء کے ہاتھوں 7فارغین حفاظ کرام کے سروں پر دستار باندھی گئی اور دیر رات مفتی افتخار احمد قاسمی کی اجتماعی دعاء پر جلسہ اختتام پذیر ہوا ۔پروگرام کو کامیاب بنانے میں حافظ محمد اسعدسکریٹری ،انجینئر محمد رمضان ، حافظ تیمور عالم ،قاری سعید الرحمن وغیرہ نے اہم رول ادا کیا۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*

 

x

Check Also

گوگل نے کنّڑ کو ‘غلیظ ترین بھارتی زبان‘ بتانے پر معذرت کر لی

جنوبی بھارتی ریاست کرناٹک کے اکثریتی آبادی کی زبان کنّڑ کو جمعرات ...