بنیادی صفحہ / قومی / کورونا وائرس : سپریم کورٹ نے جیل میں بھیڑ کم کرنے کا دیا حکم ، 90 دنوں کیلئے رہا ہوں گے قیدی

کورونا وائرس : سپریم کورٹ نے جیل میں بھیڑ کم کرنے کا دیا حکم ، 90 دنوں کیلئے رہا ہوں گے قیدی

Print Friendly, PDF & Email

نئی دہلی : کورونا کے خطرے کے پیش نظر سپریم کورٹ نے جیل میں بند چنندہ قیدیوں کو 90 دنوں کی پیرول پر رہا کرنے کا حکم دیا ہے ۔ اس سے جیل میں قیدیوں کی تعداد فوری طور پر کم ہوگی ۔ 90 دن کے بعد سبھی قیدی جیل میں واپس آجائیں گے ۔ سپریم کورٹ نے اپنے حکم میں سبھی ریاستوں سے ایک کمیٹی کی تشکیل کرنے کیلئے کہا ہے ۔ کمیٹی طے کرے گی کہ کس قیدی کو رہا کیا جائے گا اور کس کو نہیں ۔ چھوٹے موٹے جرم میں بند قیدیوں کو پہلی ترجیح دی جائے گی ۔

ملک میں کورونا وائرس کے ریکارڈ معاملات درج کئے جارہے ہیں ۔ ماہرین بھی دوسری لہر کے شباب پر آنے کی وارننگ دے رہے ہیں ۔ اسی درمیان ملک میں کورونا کے معاملات میں غیرمعمولی اضافے پر نوٹس لیتے ہوئے سپریم کورٹ نے ہفتہ کو جیلوں میں بھیڑ کم کرنے کا حکم دیا ہے ۔ خاص بات یہ ہے کہ گزشتہ سال بھی کچھ قیدیوں کو اسی طرح رہا کیا گیا تھا ۔

عدالت نے حکم جاری کرتے ہوئے کہا کہ جن قیدیوں کو پچھلے سال وبا کے پیش نظر ضمانت یا پیرول دی گئی تھی ، ان سبھی کو پھر سے وہ سہولیت دی جائے ۔ چیف جسٹس این وی رمن ، جسٹس ایل ناگیشور راو اور جسس سوریہ کانت کی ایک بینچ نے کہا کہ عدالت عظمی کے حکم پر بنائی گئی ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام خطوں کی اعلی اختیارات یافتہ کمیٹیوں کے ذریعہ گزشتہ سال مارچ میں جن قیدیوں کو ضمانت دی گئی تھی ، ان سبھی کو کمیٹیوں کے ذریعہ دوبارہ غور کئے بغیر پھر راحت دی جائے ، جس سے تاخیر سے بچا جاسکے گا ۔

کورونا کی پچھلی لہر میں بھی سپریم کورٹ نے قیدیوں کو پیرول پر رہا کرنے کا حکم دیا تھا ۔ اب وہ قیدی بھی جیل میں واپس آ چکے ہیں ۔ اب قیدیوں کو پھر سے رہا کرنے کا عمل شروع کیا جائے گا ۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*

 

x

Check Also

لکھنؤ: وسیم رضوی پر عصمت دری کا الزام، متاثرہ خاتون نے تھانے پہنچ کر گہار لگائی

لکھنؤ: اتر پردیش شعیہ وقف بورڈ کے رکن اور سابق چیئرمین وسیم ...