بنیادی صفحہ / بھٹکل و اطراف / اترکینرا میں کورونا معاملات میں اضافہ کے بعد ضلع میں چھوٹ کے اوقات میں گاڑیوں پر پابندی: بھٹکل میں پولس کی سخت ناکہ بندی

اترکینرا میں کورونا معاملات میں اضافہ کے بعد ضلع میں چھوٹ کے اوقات میں گاڑیوں پر پابندی: بھٹکل میں پولس کی سخت ناکہ بندی

Print Friendly, PDF & Email

بھٹکل: 17 مئی،2021 (بھٹکلیس نیوز بیورو) اترکینرا ضلع میں پچھلے کچھ دنوں سے کورونا کے معاملات میں مسلسل اضافے کے بعد ضلع انتظامیہ اور ضلع انچارج وزیر نے سخت قدم اٹھاتے ہوئے ضلع میں تمام مقامات پر صبح 6 بجے سے 10 بجے تک کی چھوٹ میں ضروری سرویس کے لیے چھوڑ کر بقیہ کاموں کے لیے عوام کے گاڑیاں لانے اور لے جانے پر پابندی عائد کردی ہے جو کہ 24 مئی تک بھی جاری رہے گی۔

اسی کے پیش نظر آج بھٹکل میں مختلف مقامات پر پولس نے سخت ناکہ بندی کی اور گاڑیوں کو واپس بھیج دیا۔ شمس الدین سرکل پر پولس نے صبح 10 بجے سے پہلے گھوم رہی گاڑیوں کو ضبط کیا تھا لیکن پھر سمجھا کر انہیں بھیج دیا۔ اس کے علاوہ پولس کی طرف سے آج بھٹکل مخدوم کالونی، بندر روڈ، مین روڈ اولڈ بس اسٹانڈ، ماری کٹہ، شوکت علی روڈ، نوائط کالونی قومی شاہراہ، شفا کراس اور مدینہ کالونی وغیرہ میں بھی سخت ناکہ بندی کی گئی تھی اور گاڑیوں کو واپس بھیجا جارہا تھا۔

عوام نے ان پابندیوں کو دیکھتے ہوئے پھر ایک بار تشویش کا اظہار کیا ہے اور دور دراز سے گاڑیوں کے بغیر ضروری چیزوں کے لانے کے امکانات کے بارے میں سوالات شروع کردیے ہیں۔ سمجھا جارہا ہے کہ آج بہت سے لوگوں کو اس پابندی کے متعلق معلومات نہ ہونے کی وجہ سے پولس نے ذرا سی ڈھیل دے دی تھی لیکن کل سے پولس کی طرف سے سخت شکجنہ کسنے کے امکانات ہیں۔

واضح رہے کہ اترکینرا میں کل 1208 کورنا کے معاملات سامنے آئے تھے جبکہ 21 افراد کی کورونا کی وجہ سے موت واقع ہوگئی تھی اور 929 افراد نے کورونا کو شکست دے دی تھی۔ ان سب کو دیکھتے ہوئے ضروری ہے کہ عوام حکومت کی طرف سے دی گئی ہدایات پر سختی سے عمل کریں اور احتیاطی تدابیر کو اپناتے بلا ضرورت نہ گھومیں تاکہ کورونا انفیکشن کو روکا جاسکے اور اس وبا کا جلد سے جلد خاتمہ ہوسکے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*

 

x

Check Also

آج سے 18 سال سے زیادہ عمر کے لوگوں کو مفت ملے گی نئی ویکسین، نئی پالیسی کے بارے میں جانیں ہر تفصیل

نئی دہلی: پورے ملک میں پیرکے روز سے نئی ویکسینیشن پالیسی (New ...