بنیادی صفحہ / بھٹکل و اطراف / بھٹکل کے تیس بچوں نے فطرت لائیبریری میں ایک سو سے زائد دلچسپ کتابوں کا کیا مطالعہ

بھٹکل کے تیس بچوں نے فطرت لائیبریری میں ایک سو سے زائد دلچسپ کتابوں کا کیا مطالعہ

Print Friendly, PDF & Email

بھٹکل : 23 اکتوبر، 2021 (بھٹکلیس نیوز بیورو) ادارہ ادب اطفال کے شعبۂ کتب  خانہ کی طرف سے لاک ڈاٶن میں بچوں کی چھٹیوں کاصحیح طورپر استعمال ہو اس کے لیے بچوں کے درمیان مطالعہ بیداری مہم  کاانعقاد کیاگیا جس میں 125بچوں نے شرکت کی، جن میں تیس بچوں نے سو سے زائد کتابوں کا مطالعہ کیا اور 20بچوں نے50سے زائد کتابوں کا مطالعہ کرکے کتاب دوستی کاثیوت دیا ۔  یاد رہے کہ  ۱۸ محرم ۱۴۴۳ھ مطابق 27 اگست کو رابطہ ہال میں کاروان اطفال کےسالانہ جلسہ میں ہندوستان کے معروف عالم دین کےمولانا عمیرالصدیق ندوی اور تلنگانہ اردو اکیڈمی کے ڈائیریکٹر ڈاکٹر محمد غوث صاحب نیز رسالہ  "روشن ستارے” کے مدیر جناب سردار سلیم اور ڈاکٹر مختار احمد فردین  کے ہاتھوں اول دوم اور سوم آنے والوں کو انعامات سے نوازا گیا تھا  اور ۱۴ ربیع الاول ۱۴۴۳ مطابق 21اکتوبر کو سو سے زیادہ کتابیں پڑھنے والوں کے لیے مسجد سلطانی میں اعزازی پروگرام رکھا گیا ۔

جلسہ حافظ عبدالرحمن اکرمی کی تلاوت اورہدایت اللہ ائیکری کی نعت سے جلسہ کاآغاز ہوا۔ رابع خلیفہ  نےعلامہ اقبالؒ کی نظم شکوہ اپنے دلکش انداز میں پیش کر کے سامعین کے دلوں کو مسرور کیا۔ امیرکاروان حافظ نظام رابع مصباح نے مہمانوں کے لیے استقبالیہ پیش کر کے ان کا دل جیت لیا اورشعور عسکری نے کاروان اطفال کاترانہ پیش کر کے محفل کو اور گرمایا

کنوینر شعبہ کتب خانہ آفاق محتشم ندوی نے بچوں کی لائبریری کے قیام کا مقصد بچوں کی فطرت لائبریری اور ادارہ کے تحت چلنے والی دیگر لائبریریوں کا تعارف پیش کیا،اس موقع پر ادارہ کے جنرل سکریٹر ی اور مدیر پھول نے بھی اپنے تاثرات پیش کرکے اس کامیاب مہم کی تفصیلات بیان کی۔

مہمانوں میں حافظ کبیر الدین صاحب مولوی تمیم رکن الدین اور جناب حبیب اللہ محتشم نے اپنے تاثرات سناتے ہوئے اپنی خوشی کااظہار کیا اوربچوں کو اسں سے فائدہ اٹھانے کی ترغیب  دی فہیر قاضی اورعمرصیام کولا نے اپنے دلی احساسات سامعین کے گوش گزار کیے، آخر میں مولوی ریاض الرحمان اکرمی ندوی نے ان خوش نصیب طلبہ کی فہرست پیش کی اور انعامات سے  ان خوش نصیبوں کو نوازا ۔

جلسہ میں ادارے کے ذمہ دار مولانا سمعان خلیفہ ندوی ،مولوی عمیس ندوی ،مولوی حسن شہروز ندوی و دیگر کئی حضرات نے شرکت کی ،حافظ کبیر الدین صاحب کی دعا پر مجلس اختتام پذیر ہوئی اللہ تعالیٰ ہماری اس محنت کوقبول فرمائے آمین!

واضح رہے کہ اسکول اور مدارس کے ان بچوں نے لاک ڈاؤن کے خالی ایام میں کتابوں کو پڑھ کر اپنے اوقات کو غنیمت بنایا اور کتابوں کی آخری صدی کہنے والوں کو خاموش انداز میں اپنا پیغام سنایا ۔

جنھوں نے کتابوں کا مطالعہ کیا وہ بچے تھے ،اس لیے ادارے کے ذمہ داروں  نے ان کی سطح اور معیار کا خیال رکھتے ہوئے ان کو بچوں پر لکھی کہانیوں ،قصوں اور دلچسپ افسانوں کی اردو ،انگریزی اور عربی کتابیں دیں۔

بچوں کی دلچسپی کی خاص بات یہ تھی کہ وہ کتابیں رنگا رنگ اور خوبصورت  تصویروں سے پرکشش  تھیں جن کو فطرت لائبریری میں ملک و بیرون سے لایا گیا تھا۔

لائبریری کے ذمہ داروں نے سرپرستوں سے گزارش کی ہے کہ وہ  لائبریریوں سے زیادہ سے زیادہ فائدہ اٹھانے کے لیے اپنے بچوں کو ترغیب دیں ۔بھٹکل میں  یہ دونوں لائبریریاں ( مولاناعبدالباری اور فطرت لائبریری) بچوں کی فکری نشونما کے لیے صبح ۹ سے رات دس بجے تک کھلی ہیں۔

(رپورٹ:حافظ نظام رابع مصباح(امیر کاروان اطفال نشیبی بھٹکل)

 

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*