بنیادی صفحہ / بھٹکل و اطراف / انجمن کالج سے گریجویشن کرنے والے بھٹکل کے ناگیندر نائک بن سکتے ہیں کرناٹک ہائی کورٹ کے جج: سپریم کورٹ کالیجیم نے دوسری مرتبہ پیش کیا نام

انجمن کالج سے گریجویشن کرنے والے بھٹکل کے ناگیندر نائک بن سکتے ہیں کرناٹک ہائی کورٹ کے جج: سپریم کورٹ کالیجیم نے دوسری مرتبہ پیش کیا نام

Print Friendly, PDF & Email

بھٹکل: 6 مارچ،2021 (بھٹکلیس نیوز بیورو) بھٹکل سرپن کٹہ کے رہنے والے اور 28 سال سے کرناٹک ہائی کورٹ میں وکالت کرنے والے ناگنیدر نائک کرناٹک ہائی کورٹ کے جج بن سکتے ہیں۔

سپریم کورٹ کالیجیم نے اس بار بھی مرکزی حکومت کے سامنے ان کے نام کی سفارش کی ہے۔ اس سے قبل سپریم کورٹ کالیجیم نے 2019 میں 8  وکیلوں کے نام کی سفارش کی تھی جن میں ان کا نام بھی شامل تھا لیکن اس وقت ان کا نام منظور نہیں ہوا تھا۔ اس بار دوسری مرتبہ ان کا نام پیش ہونے سے قوی امید ہے کہ ان کے نام کو منظوری ملے گی اگر ایسا ہوتا ہے تو ناگیندر بھٹکل سے ہائی کورٹ کے جج بننے والے پہلے شخص ہونگے۔

خیال رہے کہ انہوں نے انجمن کالج میں گریجویشن  مکمل کیا تھا جس کے بعد وکالت کی تعلیم لیے بینگلورو منتقل ہوئے تھے  اور وہیں اپنی وکالت مکمل کی تھی۔

کیا ہے سپریم کورٹ کالیجیم: آئین میں اور پھر عدالت کی طرف سے منصفین کے تین مقدمات میں (1982، 1993، 1998) میں اس بات کی توثیق کی گئی کہ صدر عدالتِ عظمیٰ کے منصفین کی تعیناتی کالیجیم کی سفارشات کے تحت کرے گا۔ کالیجیم میں بھارت کے منصفِ اعلیٰ، عدالتِ عظمیٰ کے چار بزرگ ترین منصفین اور متعلقہ امیدوار جس عدالت ِ عالیہ سے آنا ہو، اس کے منصفِ اعلیٰ شامل ہوتے ہیں۔

 

1993 تک یونین کابینہ منصفین کی تعیناتی کی سفارش صدر سے کرتی تھی۔ 1993 کے دوسرے مقدمے میں یہ بات واضح کر دی گئی کہ کوئی بھی وزیر یا انتظامیہ کے ارکان صدر کو کسی بھی نام کی سفارش نہیں کر سکتے۔ اس کام کے لیے محض کالیجیم سے ہی نام بھیجے جائیں گے۔ اسی فیصلے میں انتظامیہ کو کالیجیم کے سفارش کردہ کسی نام کو رد کرنے کا اختیار دیا گیا تاہم یہ اختیار ابھی تک استعمال نہیں کیا گیا۔

 

x

Check Also

بھٹکل واطراف میں کہیں پر بھی ہلال عید نظر نہیں آیا؛ 30/روزے ہوں گے مکمل

بھٹکل: 11 مئی، 2021 (بھٹکلیس نیوز بیورو) قاضی صاحبان کی اطلاع کے ...