بنیادی صفحہ / مضامین / ناوزے فاترار زاللے پروگراما سلسلات چند گزارشات۔۔۔ تحریر: عبد المتین منیری

ناوزے فاترار زاللے پروگراما سلسلات چند گزارشات۔۔۔ تحریر: عبد المتین منیری

Print Friendly, PDF & Email

آج سگلو دیس بھلی ذہنی تکلیف انی اذیت بھیتر گزرلو، دون دیسا فوڑے ناوزے فاترا اوپر جے کائیں پروگرام زالوہوتو انی ہیں سلسلات امچے محترم مولانا محمد صادق اکرمی ندوی صاحب جیکائیں نکیر کیلے، انی ہیجی مخالفت انی تائید بھیتر جے کائیں تبصرے سامیں ایلے، چند مانسا طرفین، جیکونتو منفی رویہ اپنون گیلو، قوما سامیں ایک سوالیہ نشان دھرون واٹے۔
مولانا قوما سبب نوے نوہیں، گذشتہ پنتالیس ورسا فوڑے سلطان مزگتی امامت چی ذمہ داری شروع کیلو وقت ٹیکون اصلاح معاشرہ سبب وڑلو فعال کردار ادا کرتے واٹیت، ایتا تینچےاصلاحی دروس چو حلقہ ابولیاں بھیتر کوں بھللی وسیع انی مقبول زاون اشے، اللہ موصوفا چی عمریت برکت دیو انی صحت و عافیت سرین قوما چی خدم کروچو موقعہ دیو۔ آمین۔
مولانا سرین امکاک بھللی سا اختلاف رائے رھاوں سکتا، لیکن مولانا جے کونتے انداز بھیتر نہی المنکر سلسلات اپلو کردار ادا کرتے واٹیت تیکاک امیں اللہ چی ایک نعمت ولکھو کاز، جے کونتے معاشرہ بھیتر نہی عن المنکر کرتلی مانساک پسند کرون وشےناہی، تینگاک اللہ چے عذابان کونیوں روکوں سکے ناہیت۔
مولانا چی تقریر چو ایک حصہ امچے کوں کانات پڑلو،لیکن اپلی تقریر بھیتر تیں جے کائیں زاپنے بللے کہ ((جیکونتی نیکی مانشے خیر چے کام کرتات تینچے کامات رکاوٹ گھالون وتا، انی علماء اسلے نیک کاماک روکوتات،انی تینکاک برائیو روکوں چی توفیق زاناہی))۔ امیں مولانا چے ہیں زاپنا چی گہرائی سر وسو سکلاناؤں، امچے کانات ایتا سر بھٹکلے چے علماء طرفین خیر چے کونتیوں کام روکولی خبرپڑلی ناہی، زاوں سکتا کہ مولانا کونتیوں خاص کاماک خیر ولکھتات، انی علماء چو سواد اعظم ہی رائے سرین اختلاف دھروتا ،ترین تینکاک مطمئن کروچی مولانا چی ذمہ داری، ٹیبلا اوپر ایون اپلی رائے چی وضاحت کرون اپلی ذمہ داری پورا کروچی ہو تینچو اخلاقی انی دستوری فریضہ، ہی ذمہ داری تیں پورا کروکاز، جیکونتی زاپنی ٹیبلا اوپر زاپوچی رھاتا، تی زاپنی عواما سامیں پیش زالان، غلط فہمیوں پیدا زاتا، آز مولانا چے خطاب اوپر جیکائیں تبصرے پڑھومللے ہیں بھللی تکلیف دہ ہوتے، اگر مولانا اسللی شخصیت سرین توہین انی بے مروتی چو معاملہ زاتا ترین، دوسرے علماء چی عزت چو اللہ کچ حافظ ۔ فوڑے پاگرات بانا فاتر بلون رھاتو ہوتو، تو فاتر کھال پڑلان سگلو پاگرو خال پڑتو ہوتو، اگر مولانا چی بے عزتی کرون گیلی ترین امچے معاشرات بیجی کوناچی عزت محفوظ رھاونچے ناہی، اللہ تو دیس امچے ڈولاک داکھڑوچے ناکھا۔
ہی بحث بھیتر ایک اہم نکتہ امیں اٹھو اسرتے واٹیوں، امیں نوائط انی امچی بھاس نائطی، تاریخ مطابق آز پوسون چھ شیں ورسافوڑے جیتا عرب تاجر امچے علاقات جیکوناک عربی تلودان، انی مغربی مورخین تلوناڈو بلتات، مگ ہیچے ناوں کینرا زالے، ہو علاقہ عام کرناٹک پاسون الگ ہوتو، ہیں علاقات کونکنی انی مراٹھی زبان غالب ہوتی، کنڑی زبان چو رواج ایٹلی زیادہ نھوتو، جیتا عرب تاجر ہینگا ایلے ترین ہینگا چی بھاس زاپوچی ضرورت پڑلی، ترین تیں ہی بھاشیک عربی حروف تہجی دیون مسلمان کیلے، مسلم انی عرب تہذیب چے اثر بھیتر ہی بھاشیت عربی انی فارسی الفاظ شامل زالے، جیشی شمالی ہند بھیتر کھڑی بولی دیوناگری رسم الخط اختیار کرون ہندی زالی انی عربی انی فارسی رسم الخط اختیار کرون اردو، دوسرے معنی بھیتر نائطی انی اردو اسلام اختیار کیلی بھاسو، ایتا اگر فرقہ پرست طاقتو سکھ مذہباک ہندو مذہب بلوچار اصرار کرتات، انی ار یس یس چے پرمکھ مسلمان سمیت ہر بھارت باسی ہندو بلو اوپر ضد کرتا ت، انی امیں ہیکا اسلام انی کفر چو مسئلہ بلتات، اشی کچ کونکنی اپلی طاقت بڑھونک سبب امکاک کوں کونکنی بھیتر شامل کروچی کوشش کرتے واٹیت۔ اشی چور دروازان تینچی تہذیب انی مذہبی روایات امچے معاشرات داخل زاتے وسوچو خطرہ اشے، ہیاں سبب کہ آر یس یس منظم طورار ہندو ایک مذہب بجائے تہذیب چی حیثیتیں اجاگر کرتے واٹے، سوریا وندنا، یوگا، بھگوت گیتا وغیرہ ہندو مذہب چے حصہ بجائے تہذیب چو حصہ بلون پروپیگنڈا کرتے واٹے۔ ہر بھاس اپلے سرین ایک مذہبی پس منظر دھروتا،کونکنی ہیں قاعدان مستثنی ناہی۔
امکاک اٹھو اشے، آز پوسون چالیس ورسا فوڑے انجمنات اچاریہ پنڈت ماسٹر پڑھوتے وھتے، آنجہانی ڈاکٹر چترنجن چے مالیکا،ظاہرا وڑلے بااخلاق، ہندی انی کنڑ چے ٹیچر، امتحانات کاپی کروک آسانی سرین چڑوانک سوڑتے ہوتے،اشی امچی نسلو ہی بھاسو شیکو سکلی ناہی، لیکن ڈانس ناٹک وغیرہ بھیتر تینچی بھللی دلچسپی ہوتی، گیدرنگ وقتار انجمن گراونڈ بھیتر ڈرامہ ٹھیٹر باندھو چی تمنا چو اظہار کرتے ہوتے، کوکنی طرف واپس گیلامگ امچی نائطی مسلم تہذیب چی دیوار خال پڑوک وقت لاگو چے ناہی۔
آج کیرالا بھیتر مسلم ادارانک چو جیکونتو زال اشے ، سگلے ہندوستانات ناہی، لیکن تینکاک کون ولکھتات، گزشتہ ساٹھ ستر ورسات ورسات امچے معاشرات اردو رائج زالامگ، بھٹکل اسلے دھاکلے شی گاوانک سگلی دنیا ولکھو لاگلی،حضرت مولانا علی میاں رحمۃ اللہ علیہ انی حضرت مولانا ابر ارالحق رحمۃ اللہ علیہ اسللی بزرگ شخصیات ہیگاک بار بار ایلی، انی ہر مشکل وقتار امچی فکر دھرولی، انی امچے سبب دعا کیلی، گزشتہ دہ ویس ورشے ٹیکون امچے معاشرہ بھیتر کوں اردو سرین ناطہ توڑون کونکنی سری رابطہ مضبوط کروچی زاپنی زاتے اشے، انی نیکی نیکی مانشے اردو سرین تعلق ختم کروچی زاپنی بلتے واٹیت، اشی کوں امچی نویں نسل اردو پاسون نابلد زاتے واٹے، ہوتہذیبی ارتداد ہیاری وھروچو ایک قدم، انی دانشمندان قوم سبب ایک لمحہ فکریہ۔ اللہ قومات ہر فتنہ پاسون محفوظ دھرو۔ آمین
18-02-2021

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*

 

x

Check Also

آزاد نگر تھرڈ کراس پر دھنس گئی  کڑی سے بھر ی ٹپر لاری : کافی مشقت کے بعد نکالا گیا باہر

بھٹکل: 22 جون، 2021 (بھٹکلیس نیوز بیورو) بھٹکل میں مانسون کی شروعات ...