بنیادی صفحہ / عالمی / یو اے ای کی شہزادی نے غزہ پٹی پر اسرائیلی فضائی حملوں کے خلاف اٹھائی آواز

یو اے ای کی شہزادی نے غزہ پٹی پر اسرائیلی فضائی حملوں کے خلاف اٹھائی آواز

Print Friendly, PDF & Email

متحدہ عرب امارات کی شہزادی ہند بنت فیصل القاسمی  اسرائیل کی جانب سے فلسطینی سرزمین پر بمباری اور بچوں سمیت شہریوں کی ہلاکت کے خلاف مسلسل آواز اٹھا رہی ہے۔ ایک حالیہ ٹویٹ میں انہوں نے مختلف جنگوں میں مسلمانوں کی ہلاکتوں کا موازنہ ہولوکاسٹ  سے کیا۔

یہ دعوی کرتے ہوئے کہ پچھلے 25 سال میں 12.5 ملین مسلمان جنگوں میں مارے گئے، شہزادی ہند بنت فیصل القاسمی نے لکھا کہ آپ نے کبھی کسی مسلمان کو کتابیں لکھتے ہوئے اور فلمیں بناتے ہوئے نہیں سنا ہوگا۔ ایسا قانون شروع کیا جائے کہ اگر آپ کو ہماری حالت زار پر ہمدردی نہیں ہے تو آپ انسان سے کم ہیں۔ ہم معاف کرتے ہیں اور آگے بڑھتے ہیں۔

ایک اور ٹویٹ میں انہوں نے غزہ پٹی  میں بچوں کے قتل کو جواز فراہم کرنے کے لیے میڈیا کو مورد الزام ٹھہرایا۔ انہوں نے لکھا کہ آپ کے زیر کنٹرول میڈیا کے بارے میں کون جانتا ہے کہ آپ مرے ہوئے بچوں کے لیے ایک بار بھی ہمدردی کا اظہار نہ کریں، یہ دعویٰ کرتے ہوئے کہ ان کے دہشت گرد سرپرستوں نے جان بوجھ کر انہیں انسانی ڈھال کے طور پر استعمال کیا۔
غزہ پٹی میں فلسطینیوں کی ہلاکتوں کا موازنہ کرتے ہوئے انھوں نے لکھا کہ ’’جرمنی میں نازیوں نے یہودیوں کے ساتھ جو کچھ کیا اس پر ہم سب رو پڑے ہیں۔ اس کے باوجود یہ مضحکہ خیز ہے کہ وہی یہودی صیہونی کس طرح بالکل اسی چیز پر نہیں روتے جو وہ فلسطینیوں کے ساتھ کر رہے ہیں۔ اگر وہ نہیں نکلتے ہیں تو ان کے گھر لے جائیں، انہیں دہشت زدہ کریں اور بمباری کریں۔
متحدہ عرب امارات کی شہزادی نے ان ہلاکتوں کو ’سیلف ڈیفنس‘ قرار دینے پر امریکہ کو تنقید کا نشانہ بنایا اور لکھا کہ اسرائیل، غزہ کو اسلامی جہاد (Islamic Jihad) کے بدلے تباہ کررہا ہے۔ لہذا یہ بمباری اور شہریوں اور بچوں کو ہلاک کرنے کو بالکل قابل فہم اور جائز سمجھتا ہے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*