بنیادی صفحہ / عالمی / جذباتی ماحول میں امریکی صدر جو بائڈن اور نائب صدر کملا ہیرس کی حلف برداری، امریکہ میں نئے دور کا آغاز

جذباتی ماحول میں امریکی صدر جو بائڈن اور نائب صدر کملا ہیرس کی حلف برداری، امریکہ میں نئے دور کا آغاز

Print Friendly, PDF & Email

20 جنوری امریکہ کی تاریخ میں ہمیشہ یاد رکھا جائے گا، کیونکہ کئی طرح کے نشیب و فراز اور مشکل حالات سے گزرنے کے بعد جو بائڈن نے امریکی صدر اور کملا ہیرس نے نائب صدر عہدہ کا حلف لے لیا۔ حلف برداری تقریب انتہائی جذباتی معلوم پڑ رہی تھی جب وہاں موجود لوگ ہی نہیں بلکہ جو بائڈن کی بیوی جل بائڈن کی آنکھیں بھی خوشی سے نم ہو گئیں۔ بائڈن کی حلف برداری سے قبل امریکہ کی مشہور گلوکارہ لیڈی گاگا نے قومی ترانہ گا کر ماحول کو خوشگوار بنا دیا، اور پھر تاریخی حلف برداری کے ساتھ جو بائڈن امریکہ کے 46ویں صدر بن گئے۔

کملا ہیرس نے بھی تالیوں کی گڑگڑاہٹ کے درمیان امریکہ کی نائب صدر کا حلف لیا۔ حلف لینے کے ساتھ ہی وہ امریکہ کی تاریخ میں پہلی سیاہ فام نائب صدر، پہلی ہند نژاد نائب صدر اور پہلی خاتون نائب صدر بن گئی ہیں۔ اس تاریخی حلف برداری تقریب میں بل کلنٹن اور براک اوباما جیسی کئی عظیم ہستیاں موجود تھیں اور اوباما نے تو کملا ہیرس سے ملاقات بھی کی اور انھیں مبارکباد دیتے ہوئے کہا’’آپ پر فخر ہے۔‘‘

جو بائڈن کے امریکی صدر کا حلف لینے کے بعد انھیں مبارکباد پیش کرنے کا سلسلہ شروع ہو گیا ہے۔ دنیا کی عظیم ہستیاں بائڈن کے ساتھ ساتھ ہیرس کو بھی مبارکباد پیش کر رہی ہیں۔ ہندوستانی وزیر اعظم نریندر مودی نے بھی انھیں مبارکباد پیش کرتے ہوئے ایک ٹوئٹ کیا ہے جس میں لکھا ہے کہ ’’ہند -امریکہ کی شراکت داری مشترکہ اقدار پر مبنی ہے۔ امریکی صدر جو بائڈن کے ساتھ کام کر ہند-امریکہ شراکت داری کو نئی اونچائی پر لے کر جانے کو ہم پرعزم ہیں۔‘‘

کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے بھی ٹوئٹ کر جو بائڈن اور کملا ہیرس کو مبارکباد پیش کی ہے۔ انھوں نے اپنے ٹوئٹ میں لکھا ہے ’’جمہوریت کے نئے باب کی شرعات کے لیے امریکہ کو مبارکباد۔ صدر بائڈن اور نائب صدر ہیرس کو نیک خواہشات۔‘‘

x

Check Also

فیک نیوز، نفرت آمیز اور ملک مخالف مواد پر روک لگانے کے مطالبہ کی عرضی، ٹوئٹر اور مرکز کو سپریم کورٹ کا نوٹس

واشنگٹن: سپریم کورٹ نے فیک نیوز، نفر آمیز خبر اور ملک مخالف ...