بنیادی صفحہ / صوبائی / کرناٹک میں تین نائب وزیر اعلی بنے، یدی یورپا کے لئے راہ آسان نہیں

کرناٹک میں تین نائب وزیر اعلی بنے، یدی یورپا کے لئے راہ آسان نہیں

Print Friendly, PDF & Email

کرناٹک میں وزیر اعلی بی ایس یدی یورپا کی قیادت والی حکومت میں تین نائب وزیر بنائے گئے ہیں جو کرناٹک میں ایک مرتبہ پھر غیر یقینی سیاسی صورتحال کی جانب اشارہ کرتا ہے ۔ وزیر اعلی یدی یو رپا نے کل اپنے سترہ وزیروں کے قلمدان بھی تقسیم کر دئے اور اس اعلان کے بعد کچھ حلقوں سے ناراضگی سامنے آئی ہے۔ یہ پہلی مرتبہ ہے کہ کرناٹک میں تین نائب وزیر اعلی بنائے گئے ہیں ۔ واضح رہے کہ گزشتہ ماہ ایچ ڈی کمار سوا می کی قیادت والی جنتا دل (ایس) – کانگریس مخلوط حکومت اقلیت میں آنے سے گر گئی تھی ۔ اس کے بعد کرناٹک میں بھارتیہ جنتا پارٹی نے حکومت تشکیل دی تھی۔

نائب وزیر اعلی بنائے جانے والوں میں گووند کرجول، اشوتھ نارائن اور لکشمن سوادی شامل ہیں اور ان تینوں کا تعلق ریاست کی تین بڑی ذاتوں لنگایت، ووکالیگا اور دلت سے ہے ۔ تین نائب وزیر اعلی بنائے جانے کا مقصد جہاں سب کو خوش کرنا ہے وہیں آنے والے انتخابات کو بھی ذہن میں رکھا گیا ہے ۔ کرجول کو پی ڈبلو دی اور سماجی انصاف کے قلمدان دئے ہیں، نارائن کو اعلی تعلیم اور آئی ٹی جبکہ لکشمن سوادی کو ٹرانسپورٹ کی وزارت دی گئی ہے ۔سوادی ابھی اسمبلی کے رکن نہیں ہیں او ر ان کو وزیر اور نائب وزیر علی بنائے جانے پر بی جے پی کے ارکان میں ناراضگی ہے ۔

یدی یورپا کی وزارت سے ایک بات تو صاف ہے کہ بی جے پی نے ان کو کھلی چھوٹ نہیں دی ہے اور بی جے پی نے اگلے انتخابات کو نظر میں رکھتے ہوئے نئی قیادت تیار کرنے کی جانب قدم اٹھایا ہے ۔ بی جے پی کرناٹک میں نوجوان قیادت کو فروغ دینے کے حق میں ہے اور اس کا مستقبل میں یدی ورپا کو انتخابی سیاست سے دور رکھنے کا پلان ہے ۔

قلمدانوں کی تفصیل اس طرح ہے:
1)گووند کارجول (نائب وزیر اعلیٰ، تعمیرات عامہ سماجی بہبود)
2) ڈاکٹر اشوت نارائن (نائب وزیر اعلیٰ، اعلیٰ تعلیم اور آئی ٹی بی ٹی، سائنس اینڈ ٹکنالوجی)
3) لکشمن سوادی (نائب وزیر اعلیٰ اور ٹرانسپورٹ)
4) کے ایس ایشورپا (پنچایت راج)
5) جگدیش شٹر (بڑی اور درمیانی صنعتیں)
6) آر اشوک (وزیر محصولات)
7) بی شری راملو (صحت اور خاندانی بہبود)
8) سریش کمار (پرائمری اور سیکنڈری تعلیم)
9) وی سومنا (ہاؤزنگ)
10) سی ٹی روی (سیاحت)
11) بسوراج بومئی (وزیر داخلہ)
12) کوٹا سرینواس پجاری (مزرائے، ریوینو، ماہی گیری)
13) جے سی مادھو سوامی (قانون اور پارلیمانی امور)
14) ایچ ناگیش (آب کاری)
15) پربھو چوہان (مویشی پالن)
16) شریمیتی ششی کلا جولے (بہبودی خواتین و اطفال
17) سی سی پاٹل (کان کنی اور ارضیات)

 

x

Check Also

ساتویں سے دسویں تک کے امتحانات کی تاریخ 20 اپریل کے بعد طے ہوگی؛ اگلے تعلیمی سال کے داخلوں پر بھی محکمہ تعلیمات نے لگائی روک

بنگلور: 26 مارچ، 20 (بھٹکلیس نیوز بیورو) محکمہ تعلیمات کی طرف سے ...