بنیادی صفحہ / صوبائی / ریاست بھر میں 23/نئے فرسٹ گریڈ کالج کا قیام ہوگا ؛ دیش پانڈے

ریاست بھر میں 23/نئے فرسٹ گریڈ کالج کا قیام ہوگا ؛ دیش پانڈے

Print Friendly, PDF & Email

ریاست بھر میں 23/نئے فرسٹ گریڈ کالج کا قیام ہوگا ؛ دیش پانڈے
آدھار کارڈ لازمی نہیں ہے اختیاری ہے
بھٹکلیس نیوز / 31 اکتوبر، 13
کاروار / (نامہ نگار) شمالی کنڑا ضلع میں حکومت کی کسی بھی سہولت کے حصول کے لئے آدھار کارڈ بطور ثبوت پیش کرنے کی ضرورت نہیں ہے ۔ اس کی اطلاع ریاستی وزیر برائے اعلیٰ تعلیم و سیاحت اور شمالی کنرا کے نگراں کار وزیر آر وی دیش پانڈے نے دی ۔ موصوف کل ڈپٹی کمشنر کے دفتر میں کے ڈی پی میٹنگ کے بعد اخباری نمائندوں سے مخاطب تھے ۔ انہوں نے کہا کہ آدھار کارڈ اختیاری ہے لازمی نہیں ۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ ملک کی سپریم کورٹ نے آدھار کارڈ کے بارے میں وضاحت کردی ہے ۔ شمالی کنڑا ضلع میں گیس کے صارفین کو آدھار کارڈ بتانا لازمی نہیں ہے لیکن بعض گیس ایجنسیوں کی جانب سے آدھار کارڈ پیش کرنے کے بارے میں دباؤ ڈالے جانے کی شکایات ملی ہیں ۔ اس سلسلے میں مناسب کارروائی کرنے کے لئے ڈپٹی کمشنر کو ہدایات دی گئی ہیں ۔ دیش پانڈے نے اے پی ایل کارڈ کے سلسلہ میں بات کرتے ہوئے کہا کہ حکومت سے اپیل کی گئی ہے کہ اے پی ایل کارڈ والوں کو پہلے کی طرح چاول اور دیگر اشیاء تقسیم کی جائیں ۔ وزیر موصوف نے کہا کہ کاروار میں قائم کی جانے والی مجوزہ میڈیکل کالج کے لئے ریاستی حکومت کے انتظامیہ کی جانب سے منظوری مل گئی ہے اور کالج کے پہلے مرحلے کے کاموں کے لئے 120/کروڑ روپئے منظور ہوگئے ہیں جس کے لئے کاروار ڈسٹرکٹ اسپتال کے نام سے موجود 23.35 ہیکڑ زمین کو میڈیکل سائنس ادارے کے نام منتقل کیا گیا ہے چونکہ میڈیکل کالج کے قیام کے لئے 300/بستروں کی اسپتال کا ہونا لازمی ہے ، لہٰذا محکمہ صحت و خاندانی بہبودی کی حیطہ عمل میں موجود 400/بستروں والی کاروار ڈسٹرکٹ اسپتال کو اس میڈیکل کالج کی تعلیمی اسپتال کرنے کے بارے میں اہم فیصلہ کیا گیا ہے ۔ مسٹر دیش پانڈے نے کہا کہ اپنی حفاظت کے لئے استعمال کی جانے والی بندوق کے لائسنس کے حصول کے لئے عرضی دار کا ڈپٹی کمشنر کے پاس آنا ضروری ہے جبکہ فصلوں کی حفاظت کے لئے استعمال کی جانے والی بندوق کے لائسنس کی تجدید کے لئے آن لائن عرضی داخل کرنا کافی ہے ۔ ان لوگوں کو اپنی بندوق کے ساتھ ضلعی مرکز کو آنے کی ضرورت نہیں ہے ۔ البتہ نئے سرے سے فصلوں کی حفاظت کے لئے بندوق حاصل کرنے کی عرض داشت داخل کرنے کے لئے ڈپٹی کمشنر کے پاس آنا ضروری ہے ۔ وزیر موصوف نے کہا کہ سرسی ڈویژن کو 20/ اور کاروار ڈویژن کو 20/نئی بسیں فراہم کی گئیں ہیں ۔ دیش پانڈے نے کہا کہ شمالی کنڑا ضلع کے پرائمری اسکولوں میں اساتذہ کی کمی کو پورا کرنے 716/مہمان اساتذہ کا تقرر کیا گیا ہے اس طرح کاروار تعلیمی ضلع میں خالی 120/اور سرسی تعلیمی ضلع میں خالی 596/ عہدوں کو پُر کیا گیا ہے ۔ اسی طرح پی یو اور ڈگری کالجوں میں خالی عہدوں کو پر کرنے کے لئے اقدامات کئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ضلع میں پی یو کالجوں کے 22/ کمروں کی تعمیر کے لئے 2.25 کروڑ روپئے منظور کئے گئے ہیں ۔
گرلز کالج برائے کاروار: شمالی کنڑا میں پہلی سرکاری فرسٹ گریڈ کالج برائے خواتین کو منظوری دی گئی ہے اس کالج کا کام آئندہ تعلیمی سال سے شروع ہوگا اور کالج میں جون،2014 سے لڑکیوں کے داخلہ کا آغاز ہوگا ۔ مجوزہ خواتین کے کالج کو فی الحال چلانے کے لئے نوڈل آفیسر اور جوائنٹ ڈائرکٹر ڈاکٹر دیو آنند آر گاؤنگر نے جگہ کا معائینہ کیا ہے ۔ اس کالج کو ذاتی زمین اور عمارت ملنے تک ہناگا سومناتھ تعلیمی ادارے میں چلانے کی اس تعلیمی ادارے کے صدر پی ایم تانڈیل نے اجازت دی ہے ۔ ضلع کے غریب اور دیہات کی خواتین کو آسانی سے کالج اور اعلیٰ تعلیم فراہم کرنے کے لئے ضلع کے نگراں کار وزیر آر وی دیش پانڈے نے یہ منصوبہ ضلع کو بطور تحفہ دیا ہے ۔ یاد رہے کہ ریاستی حکومت نے ریاست بھر میں 23/نئی سرکاری فرسٹ گریڈ کالج برائے خواتین قائم کرنے کا فیصلہ کیا ہے کاروار کی یہ کالج اس کا ایک حصہ ہے ۔ ہناگا کے سومناتھ تعلیمی ادارے کے تحت چلنے والے سرکاری فرسٹ گریڈ کالج برائے خواتین کے بورڈ کی نقاب کشائی جلد ہی وزیر برائے اعلیٰ تعلیم آر وی دیش پانڈے ، رکن اسمبلی ستیش سیل اور دیگر اعلیٰ افسران کی موجودگی میں ہوگی جس کی اطلاع محکمہ تعلیم کے اعلیٰ افسران نے دی ہے ۔
rv-deshpande-karwar

x

Check Also

منگلورو: ’’مسلمانوں کے بغیر ہندو راشٹر ‘ کی وکالت کر رہا تھا شخص، طلبہ نے کر دی پٹائی

منگلورو۔ کرناٹک میں منگلورو کے ایک مال میں ’ ہندو راشٹر‘ کی ...