بنیادی صفحہ / صوبائی / نجی اسپتالوں کی لوٹ پر روک لگانا ضروری: روشن بیگ

نجی اسپتالوں کی لوٹ پر روک لگانا ضروری: روشن بیگ

Print Friendly, PDF & Email

بنگلورو۔(بھٹکلیس نیوز) نجی اسپتالوں کی طرف سے مریضوں کے علاج کے نام پر جس طرح کی کھلے عام لوٹ مچائی جارہی ہے اس پر وزیر شہری ترقیات وحج جناب روشن بیگ نے گہری تشویش کا اظہار کیا اور کہاکہ علاج کے مقدس پیشہ کو ان تجارتی اسپتالوں نے لوٹ کا ذریعہ بناکر اس پیشہ کو داغدار بنادیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ پیسے کیلئے ان اسپتالوں نے اپنی اسپتالوں کو فائیو اسٹار ہوٹلوں کی طرح بناکر رکھ دیا ہے، جہاں علاج کرانے کے بارے میں غریب اور متوسط طبقے کے لوگ تصور بھی نہیں کرسکتے۔ آج نیشنل اربن ہیلتھ مشن کے زیر اہتمام بلدیہ کارکنوں کیلئے منعقدہ تربیتی پروگرام کا افتتاح کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ ہائی ٹیک اسپتالوں میں بھی غریبوں کا علاج ہونا چاہئے، اس کیلئے حکومت کوایسے ضوابط وضع کرنے ہوں گے، جس سے ان اسپتالوں کی اجارہ داری ختم ہو۔ انہوں نے کہاکہ سنگین امراض میں مبتلا افراد کو دواؤں تک رسائی بھی دن بدن مشکل ہوتی جارہی ہے۔ دواؤں کی تجارت پر ایک منظم مافیا قابض ہوچکا ہے۔ سستی جنرک دواؤں تک عوام کی رسائی منظم طریقے سے محدود کی گئی ہے۔ اس سلسلے کو ختم کیاجاناچاہئے۔انہوں نے کہاکہ کئی بڑے اسپتالوں میں غریب مریضوں پر نئے نئے طریقۂ علاج کا تجربہ کیا جاتا ہے ،جس کی وجہ سے ان غریبوں کی جانیں ضائع ہوجاتی ہیں۔یہ سلسلہ رکنا چاہئے۔ اگر جدید طریقۂ علاج کا تجربہ کرنا ہی ہے تو یہ ریاستی وزراء ، آئی اے ایس، آئی پی ایس افسران اور اراکین اسمبلی پر کیا جائے نہ کہ غریبوں پر۔ اسپتالوں کی یہ ذمہ داری ہے کہ ہر شہری چاہے وہ غریب ہو یا امیر اس کی صحت پر توجہ دے، لیکن نجی اسپتالوں کے معاملے میں ایسی صورتحال نہیں ہے، بلکہ ان لوگوں نے پیسہ لوٹنا ہی اپنا مقصد بنالیاہے۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے مرکزی وزارت صحت کے جوائنٹ سکریٹری راجیشور راؤنے بتایا کہ نیشنل اربن ہیلتھ مشن کے تحت 50فیصد رقم بنگلور کو دی گئی ہے، اس سے عوامی صحت کے حفظان میں کافی مدد ملے گی، باقی 50فیصد رقم بی بی ایم پی کی طرف سے برداشت کی جائے گی۔انہوں نے کہاکہ نیشنل اربن ہیلتھ مشن کی طرف سے ملک کے 77شہروں میں خدمت انجام دی جارہی ہے۔ کنٹراکٹ کی بنیاد پر ماہر ڈاکٹروں کی خدمات حاصل کی گئی ہیں اور ساتھ ہی ضروری عملہ کا تقر بھی کیاگیا ہے۔ا س موقع پر محکمۂ صحت کی پرنسپال سکریٹری ڈاکٹر شالنی رجنیش ، نیشنل اربن ہیلتھ مشن کے کمشنر سبودھ یادو،اعلیٰ افسران اور بلدی اداروں کے نمائندے موجود تھے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*