بنیادی صفحہ / ٹیکنولوجی اور سائنس / وپرو نے 300 لوگوں کو نکالا، ایک ساتھ دو جگہ کررہے تھے نوکری

وپرو نے 300 لوگوں کو نکالا، ایک ساتھ دو جگہ کررہے تھے نوکری

Print Friendly, PDF & Email

بینگلورو: 22 ستمبر، 2022  (ایجنسی) آئی ٹی کمپنی وپرو لمیٹیڈ نے ایک ساتھ دو جگہ کام کرنے یعنی مون لائٹننگ کو لے کر 300 ملازمین کو برخاست کردیا ہے۔ جب کوئی ملازم اپنی مقررہ نوکری کے ساتھ ہی چوری چھپے دوسری جگہ بھی کام کرتا ہے تو اسے تکنیکی طو رپر ’مون لائٹننگ‘ کہا جاتا ہے۔ مون لائٹننگ کے خلاف مورچہ کھولنے والے وپرو کے چیئرمین پریم جی نے کہا ہے کہ کمپنی کے پاس ایسے کسی بھی ملازم کے لئے کوئی جگہ نہیں ہے جو وپرو کے پیرول پر رہتے ہوئے حریف کمپنیوں کے ساتھ بھی کام کرتے ہیں۔

ریشد پریم جی نے آل انڈیا مینجمنٹ ایسوسی ایشن کے قومی کانفرنس میں کہا، مون لائٹننگ کمپنی کے تئیں وفاداری کی پوری طرح سے خلاف ورزی ہے۔ حقیقت یہ ہے کہ آج ایسے لوگ ہیں جو وپرو کے ساتھ حریف کمپنی کے لئے بھی کام کررہے ہیں۔ ہم نے حقیقت میں پچھلے کچھ مہینوں میں ایسے 300 ملازمین کا پتہ لگایا ہے، جو واقعی میں ایسا کررہے ہیں۔

مون لائٹننگ سے کیوں پریشان ہیں IT کمپنیاں؟

جب 300 ملازمین کے خلاف کارروائی کے بارے میں پوچھا گیا تو انہوں نے کہا کہ خلاف ورزی کے ان معاملات میں ملازمین کو کمپنی سے نکال دیا گیا ہے۔ آئی ٹی کمپنیوں کو خدشہ ہے کہ ملازمین کے معمول کے اوقات کار کے بعد دیگر کام کرنے کی وجہ سے پیداواری صلاحیت متاثر ہوگی اور اس کی وجہ سے تنازعات اور ڈیٹا کی خلاف ورزی جیسے حالات بھی پیدا ہوسکتے ہیں۔

کمپنیوں کے ساتھ دھوکہ ہے مون لائٹننگ؟
وپرو سربراہ شروع سے ہی مون لائٹننگ کے سخت مخالف رہے ہیں اور انہوں نے اس کا موازنہ کمپنی کےساتھ دھوکہ دہی کے طور پر بھی کیا ہے۔ انہوں نے پچھلے مہینے ٹوئٹر پر کہا تھا، آئی ٹی کمپنیوں میں مون لائٹننگ کرنے والے ملازمین کے بارے میں بہت ساری باتیں سامنے آرہی ہیں۔ یہ سیدھے اور واضح طور پر کمپنی کے ساتھ دھوکہ ہے۔

 

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*