بنیادی صفحہ / ٹیکنولوجی اور سائنس / ماہرین نے زمین سے قریب ’ستاروں کا دریا‘ دریافت کیا

ماہرین نے زمین سے قریب ’ستاروں کا دریا‘ دریافت کیا

Print Friendly, PDF & Email

ویانا: ماہرین فلکیات نے اب تک ہماری آنکھ سے اوجھل اور زمین سے قریب ایسے ستاروں کا مجموعہ دریافت کیا ہے جو ایک ساتھ ایک سمت میں آگے بڑھ رہے ہیں اور ماہرین نے انہیں ستاروں کا دریا کا نام دیا ہے۔

جنوبی آسمان پر موجود ان ستاروں پر یونیورسٹی آف ویانا، آسٹریا کے ماہرین نے یوروپی خلائی سیٹلائٹ گایا کی تصاویر اور ڈیٹا میں ان ستاروں کو دریافت کیا ہے۔ تاروں بھری اس لہر میں 4000 سے زائد ستارے موجود ہیں جو ایک ارب سال قبل اپنی تشکیل کے بعد سے ہی ایک ساتھ آگے بڑھ رہے ہیں۔

زمین سے قربت کی بنا پرستاروں بھرا یہ دریا کئی تحقیقات کے لیے اہم ہیں۔ انہیں دیکھ کر ہم جھرمٹوں کے اشتراک، مِلکی وے کے ثقلی میدان اور دیگر سیاروں کی تحقیق کے بارے میں بہت کچھ جان سکتے ہیں۔ اس سے قبل ہماری مِلکی وے کہکشاں میں کئ اقسام کی جھرمٹیں دریافت ہوتی رہی ہیں۔

ان کی دریافت اور حساب کتاب میں گایا سیٹلائٹ نے بہت معاونت کی ہے اور اسی بنا پر ماہرین نے ستاروں کے دریا کا تھری ڈی نقشہ بھی بنایا ہے جو ان کی حرکات کو ظاہر کرتا ہے۔ یہ ستارے اگرچہ ایک ہی وقت میں بنے ہیں لیکن ملکی وے کہکشاں کی ثقلی قوت نے انہیں دانوں کی طرح بکھیردیا ہے۔

ماہرین کا خیال ہے کہ ستاروں کا یہ دلچسپ مجموعہ اپنی پیدائش کے بعد سے اب تک ہماری کہکشاں کے گرد چار چکر مکمل کرچکا ہے۔ اس پر تحقیق سے ہم اپنی کہکشاں یعنی ملکی وے کے ثقلی اثرات اور ستاروں پر اس کے اثرات کے بارے میں بہت کچھ جان سکتے ہیں۔

x

Check Also

پیسوں کے بغیر گھر لے جائیں یہ الیکٹرک اسکوٹر ، ساتھ ہی پائیں 8000 کا کیش بیک

الیکٹرک اسکوٹرس کی دیمانڈ تیزی سے بڑھ رہی ہے اور کمپنیاں بھی ...