بنیادی صفحہ / ٹیکنولوجی اور سائنس / ایلون مسک نے ٹوئٹر کی دھمکی کا اڑایا مذاق، کہا- مجھے عدالت لے جاکر خود پھنس جائے گی کمپنی

ایلون مسک نے ٹوئٹر کی دھمکی کا اڑایا مذاق، کہا- مجھے عدالت لے جاکر خود پھنس جائے گی کمپنی

Print Friendly, PDF & Email

سوشل میڈیا سائٹ ٹوئٹر کو خریدنے کا معاہدہ توڑنے کے بعد کمپنی اور دنیا کے امیر ترین شخص ایلون مسک کے درمیان ٹویٹ کی جنگ چھڑ گئی ہے۔ جب ٹوئٹر  (Twitter)  نے مسک کو عدالت میں دیکھنے کی دھمکی دی تو مسک نے اس دھمکی کا مذاق اڑایا۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ دونوں کے درمیان لفظوں کی جنگ ایک ہی کمپنی کے ذریعے ہو رہی ہے، جس کی ڈیل نے تمام تنازعات کو جنم دیا ہے۔ مسک نے اپنے ٹوئٹر ہینڈل پر ہنستی ہوئی تصویر شیئر کرکے کمپنی کی دھمکیوں کا مذاق اڑایا۔ انہوں نے ٹویٹ کیا- ‘پہلے اس نے (ٹوئٹر) کہا کہ میں ان کی کمپنی نہیں خرید سکتا۔ بعد میں انہوں نے کہا کہ وہ بوٹ (فرضی اکاؤنٹ) کو ظاہر نہیں کر سکتے اور اب وہ مجھے عدالت کے ذریعے ٹویٹر خریدنے پر مجبور کرنا چاہتے ہیں، لیکن اب انہیں عدالت میں بھی بوٹ ظاہر کرنا ہوگا۔

ایلن مسک  ( Elon Musk)  کی ٹویٹ کو اب تک تقریباً 10 لاکھ لائکس اور 35 ہزار بار ری ٹویٹ کیا جا چکا ہے۔ معاہدے کو منسوخ کرتے ہوئے مسک نے کہا کہ یہ فیصلہ معاہدے میں شامل کئی شرائط کی خلاف ورزی کے باعث لینا پڑا۔
دراصل مسک نے مائیکروبلاگنگ سائٹ ٹوئٹر کو خریدنے سے انکار کرتے ہوئے گزشتہ ہفتے معاہدہ منسوخ کر دیا تھا۔ مسک نے سال کے آغاز میں ٹوئٹر کو خریدنے کے لیے 44 بلین ڈالر کی بولی لگائی تھی جسے کمپنی نے بھی منظور کر لیا تھا۔ تاہم مسک نے سوشل سائٹ پر جعلی اکاؤنٹس کے حوالے سے اعداد و شمار مانگے تھے جس پر درست معلومات نہ ملنے پر ڈیل رد کر دی گئی۔ معاہدے میں شامل قوانین کے مطابق اگر مسک معاہدہ رد کرتا ہے تو اسے ہرجانہ کے طور پر بھاری رقم ادا کرنا ہوگی۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*