بنیادی صفحہ / کھیل / انڈر 19 کرکٹ عالمی کپ: ہندوستان نے پاکستان کو 203 رنوں کی کراری شکست دی

انڈر 19 کرکٹ عالمی کپ: ہندوستان نے پاکستان کو 203 رنوں کی کراری شکست دی

Print Friendly, PDF & Email

کرائسٹ چرچ۔  شبھم گل (ناٹ آؤٹ 102) کی شاندار سنچری کے بعد ایشان پوریل (17 رن پر چار وکٹ) کی خطرناک گیند بازی کی بدولت نوجوان ہندوستانی کھلاڑیوں نے منگل کو اپنے روایتی حریف پاکستان کو 203 رنوں کی کراری شکست دے کر آئی سی سی انڈر -19 کرکٹ عالمی کپ کے فائنل میں جگہ بنا لی جہاں اس کا مقابلہ آسٹریلیا سے ہوگا۔ ہندوستانی کپتان پرتھوی شا نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کرنے کا فیصلہ کیا اور مقررہ 50 اووروں میں نو وکٹ پر 272 رن کا اسکور بنایا۔ اس کے جواب میں پاکستان کی ٹیم 29.3 اووروں میں محض 69 رن کے معمولی اسکور پر ڈھیر ہو گئی۔ ہندستان نے اسی کے ساتھ عالمی کپ ٹورنامنٹ کے فائنل میں اپنی ناقابل شکست آرڈربھی برقرار رکھا اور اب خطاب کے لئے اس کا مقابلہ آسٹریلیا کے ساتھ 3 فروری کو ماؤنٹ مانگنوئي میں ہوگا۔

ٹیم انڈیا کی فتح میں اس کے اسٹار بلے باز شبھم کا اہم کردار رہا جنہوں نے موجودہ ٹورنامینٹ میں مسلسل چھٹی مرتبہ 50 سے زیادہ کا اسکور بنایا۔ انہوں نے 94 گیندوں میں سات چوکے لگاکر ناٹ آؤٹ 102 رن بنائے ۔ اوپنر اور کپتان پرتھوی شا ن ے 41 رن اور منجوت کالرا ن ے 47 رن بناکر ٹیم کو اچھی شروعات دلائی۔ دوسری جانب بڑے ہدف کے سامنے پاکستان کے بلے باز وں کی کارکردگی مایوس کن رہی اور ٹیم 100 رنوں تک بھی نہیں پہنچ سکی اس کے صرف تین بلے باز دہائی کے ہندسے تک ہی پہنچ سکے جن میں روہیل ناظر نے 18 رنوں کی بڑی باری کھیلی۔ سعد خان 15 اور محمد موسا نے ناٹ آؤٹ 11 رن بنائے۔ ہندستانی گیندبازوں میں ایشان چھ اووروںمیں 17 رن دیکر چار وکٹ حاصل کرکے کامیاب رہے ۔ شیوا اور ریان پراگ کو دو دو وکٹیں ملیں جبکہ انکل رائے اور ابھیشیک شرما نے ایک ایک وکٹ حاصل کئے۔

راہل دراوڑ کی قیادت میں انڈر 19 ٹیم نے اہم سیمی فائنل مقابلے میں زبردست کھیل دکھایا اور بلے بازی اور گیندبازی کے علاوہ شیوم ماوی اور پرتھوی شا نے فائن لیگ اور سلپ میں کمال کے کیچ لے کر ٹیم کی کامیابی میں اہم تعاون دیا۔ ہندستان کے تیسرے تیز گیندباز ایشان نے پاکستان کے سب سے زیادہ چار وکٹ لئے اور پاکستان کو ٹورنامینٹ کی تاریخ میں سب سے کم اسکور پر آل آؤٹ کردیا۔ ہندستان کی کارکردگی جہاں عمدہ رہی وہیں پاکستانی فیلڈروں نے منجوت کو تین مرتبہ اور پرتھوی کا ایک بار کیچ چھوڑ کر نئی زندگی بخشی جس کا فائدہ دونوں اوپنروں نے اٹھاتے ہوئے پہلے وکٹ کے لئ ے 89 رنوں کی شراکت داری کی۔پرتھوی نے 42 گیندوں میں تین چوکے اور ایک چھکا لگایا جبکہ منجوت نے 59 گیندوں میں سات چوکے لگائے۔پرتھوی کو موسا نے رن آؤٹ کیا اس کے بعد منجوت بھی جلد ہی موسا کے شکار بن گئے۔شبھم نے 102 رن بنائے اور میدان سے ناٹ آؤٹ لوٹے۔ اس کے بعد هاروك ڈیسائی نے 20 رن اور انكول نے 33 رن بناکر ٹیم کو 250 رنوں کے مضبوط اسکور تک پہنچایا۔

شبھم نے چھٹے وکٹ کے لئے انکول کے ساتھ 67 رن کی شراکت داری بھی کی۔ سیمی فائنل سے پہلے ٹورنامنٹ میں مسلسل تین نصف سنچری بنا چکے شبھم نے آخری 10 اووروں میں 42 رن جوڑے۔ پاکستان نے آخری اوور میں سب سے زیادہ رن دیئے اور ہندستان نے کل 75 رن بنائے۔ شبھم کو اس کارکردگی کے لیے مین آف دی میچ منتخب کیا گیا۔ پاکستان کی جانب سے موسا نے 67 رن پر ہندستان کے سب سے زیادہ چار وکٹ لئے جبکہ ارشد اقبال کو 51 رن پر تین وکٹ ملے۔ شاهین شاہ آفریدی کو ایک وکٹ حاصل ہوا۔

x

Check Also

بال ٹیمپرنگ : آسٹریلیائی چرچ نے کی اسمتھ اور وارنر کو معافی دینے کی اپیل ، ہمدردی کی لہر میں اضافہ

سڈنی : بال ٹیمپرنگ معاملے میں کرکٹ آسٹریلیا سے سخت سزا پانے ...