بنیادی صفحہ / قومی / مرکزی وزیر روی شنکر پرساد نے پھر دہرائی شاہین باغ مظاہرین سے گفتگو کی بات ، این پی آر پر دیا یہ بڑا بیان

مرکزی وزیر روی شنکر پرساد نے پھر دہرائی شاہین باغ مظاہرین سے گفتگو کی بات ، این پی آر پر دیا یہ بڑا بیان

Print Friendly, PDF & Email

مرکزی وزیر قانون روی شنکر پرساد نے شہریت ترمیمی قانون ( سی اے اے ) کی ہورہی مخالفت کو سیاست سے متاثر بتایا اور کہا کہ یہ قانون ہندوستان کے کسی شہری پر نافذ نہیں ہوتا ہے ، اس لئے اس سے کسی بھی کمیونیٹی خاص کو ڈرنے کی ضرورت نہیں ہے ۔ انہوں نے بہار شریف میں نامہ نگاروں سے بات چیت میں کہا کہ سیاست سے متاثر ہوکر سی اے اے کی مخالفت کی جارہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وہ پہلے بھی کئی مواقع پر یہ واضح کر چکے ہیں کہ پاکستان ، بنگلہ دیش اور افغانستان میں پریشان اقلیت ہندو، سکھ ، عیسائی ، جین ، بودھ اور پارسی کو ہندستان کی شہریت دینے کیلئے سی اے اے لایا گیا ہے ۔

مرکزی وزیر نے کہا کہ سی اے اے کسی بھی ہندوستانی پر نافذ نہیں ہوتا ہے ، اس لئے اس قانون سے کسی کمیونیٹی خاص کے لوگوں کو ڈرنے کی ضرورت نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت نے قومی شہری رجسٹر( این آر سی ) کے بارے میں ابھی تک کوئی فیصلہ نہیں کیا ہے ۔

روی شنکر پرساد نے سی اے اے کی مخالفت میں دہلی کے شاہین باغ میں چل رہے دھرنا مظاہرہ پر کہا کہ لوگوں کو تنقید کرنے اور کسی مسئلے پر اپنی رائے رکھنے کا حق ہے ، لیکن ملک کو توڑنے کی اجازت کسی کو نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت شاہین باغ کے لوگوں سے خوشگوار انداز میں بات چیت کیلئے تیار ہے ۔

مرکزی وزیر نے کہا کہ کانگریس زیر قیادت ترقی پسند اتحاد ( یو پی اے ) حکومت کی مدت کار میں پہلی مرتبہ سال 2010 میں قومی آبادی رجسٹر ( این پی آر ) تیار کیا گیا تھا ۔ انہوں نے کہا کہ این پی آر مرکزی اور ریاستی حکومتوں کو پالیسی بنانے میں مدد گار ثابت ہوگی ۔

x

Check Also

کورونا سے زیادہ لوگ خوف سے مر جائیں گے: سپریم کورٹ کا انتباہ

نئی دہلی: سپریم کورٹ نے ملک میں کورونا وائرس کے مد نظر ...