بنیادی صفحہ / قومی / صحافی محمد زبیر کو بڑا جھٹکا، ضمانت عرضی خارج، 14 دنوں کی عدالتی حراست میں بھیجا

صحافی محمد زبیر کو بڑا جھٹکا، ضمانت عرضی خارج، 14 دنوں کی عدالتی حراست میں بھیجا

Print Friendly, PDF & Email

نئی دہلی: آلٹ نیوز کے شریک بانی محمد زبیر کو دہلی کی پٹیالہ ہاوس کورٹ نے بڑا جھٹکا دیا ہے۔ پٹیالہ ہاوس کورٹ نے محمد زبیر کی ضمانت عرضی کو خارج کردیا ہے۔ دہلی پولیس نے محمد زبیر کی ضمانت کی مخالفت کی تھی۔ پٹیالہ ہاوس کورٹ نے محمد زبیر کو 14 دنوں کی عدالتی حراست میں بھیج دیا ہے۔ عدالت نے کہا کہ دہلی پولیس کے ذریعہ کی جارہی جانچ کے دوران ضمانت دینے کا کوئی بنیاد نہیں ہے۔

واضح رہے کہ پٹیالہ ہاوس کورٹ نے آلٹ نیوز کے بانی محمد زبیر کی ضمانت عرضی خارج کرتے ہوئے اسے 14 دنوں کی عدالتی حراست میں بھیجا ہے۔ دہلی پولیس کی IFSO یونٹ نے دلیل دی تھی کہ کئی ممالک سے فنڈنگ کو لے کر ثبوت ملے ہیں، جس کو ویریفائی کرنا ہے۔ آگے دوبارہ محمد زبیر سے پوچھ گچھ کرنی پڑ سکتی ہے، اس لئے فی الحال جیل بھیج دیا جائے تاکہ ضرورت پڑنے پر دوبارہ محمد زبیر کی ریمانڈ کے لئے IFSO ٹیم درخواست دے سکے۔

اس سے قبل محمد زبیر کے ذریعہ 2018 میں مبینہ طور پر کئے گئے ایک قابل اعتراض ٹوئٹ معاملے کی جانچ کے لئے سلسلے میں جمعرات کو بنگلورو واقع ان کی رہائش گاہ پر پہنچی تھی۔ محمد زبیر کو ٹوئٹ کے ذریعہ ہندووں کے مذہبی جذبات کو مجروح کرنے کے الزام میں پیر کے روز گرفتار کیا گیا تھا۔
وہیں دوسری جانب، محمد زبیر پر دہلی پولیس کا شکنجہ کستا جا رہا ہے۔ دہلی پولیس نے محمد زبیرکی عدالتی حراست طلب کی ہے۔ دہلی پولیس نے محمد زبیر کے ذریعہ سازش اور ثبوتوں کو برباد کرنے کا الزام لگایا ہے اور کہا کہ ملزم کو بیرون ممالک سے چندہ ملا تھا۔ ایف آئی آر میں دہلی پولیس نے تین نئی دفعات–201 (ثبوت برباد کرنے کے لئے فارمیٹ شدہ فون اور ہٹائے گئے ٹوئٹ)، 120(بی) (مجرمانہ سازش کے لئے) اور ایف سی آر اے کے 35 معاملے جوڑے ہیں۔ وہیں اتل شریواستو کو دہلی پولیس کا اسپیشل پبلک پراسیکیوٹر مقرر کیا گیا ہے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*