بنیادی صفحہ / تازہ خبریں / وزیر اعلیٰ یڈی یورپا نے خود دیا اشارہ: 26 جولائی کو ایڈی یورپا کا استعفی!

وزیر اعلیٰ یڈی یورپا نے خود دیا اشارہ: 26 جولائی کو ایڈی یورپا کا استعفی!

Print Friendly, PDF & Email

بنگلورو- 22 جولائی،2021 (ذرائع ) کر نائک کی دوسال پرانی بی جے پی حکومت میں قیادت کی تبدیلی اب طے نظر آ رہی ہے۔ وزیر اعلی بی ایس ایڈی یورپا نے جمعرات کے روز اس بات کی تصدیق کر دی کہ وہ مستعفی ہونے والے ہیں۔ انہوں نے اشارہ دیا کہ 26 جولائی کو وہ اپنے عہدے سے مستعفی ہو جائیں گے۔ اخباری نمائندوں سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ دو ماہ پہلے ہی انہوں نے استعفے کا فیصلہ لے لیا تھا وہ صرف اعلی کمان کی طرف سے ہدایت کے انتظار میں ہیں۔ جیسے ہی ہدایت ملتی ہے وہ مستعفی ہو جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ مودی اورامیت شاہ کی طرف سے ان کو جو بھی ہدایت ملیں گی اس پر عمل کر یں گے اور اعلی کمان کی ہدایت کے مطابق عہد ہ چھوڑ دیں گے۔ اب تک نہیں ایسی کوئی مدایت نہیں ملی ہے۔ انہوں نے کہا کہ آنے والے دنوں میں وہ ریاست میں پارٹی کومضبوط کر نے کے لیے کام کرتے رہیں گے تا کہ ایک بار پھر بی جے پی کوکمل اکثریت کے ساتھ اقتدار پر لایا جا سکے۔ ایڈی یور پانے کہا کہ ان کے بعد کس کو وز یر اعلی بنایا جائے اس کے بارے میں وہ اپنی طرف سے بڑھ کر نہیں کہیں گے بلکہ اعلی کمان کی طرف سے ہی موزوں رہنما کا نام تجویز کیا جاۓ گا ۔

انہوں نے کہا کہ وہ یہ بھی نہیں بتائیں گے کہ کس طبقے سے وابستہ رہنما کو وزیراعلی مقرر کیا جاۓ ۔ وہ کسی نام کی سفارش نہیں کر یں گے۔ ایڈی یور پانے کہا کہ بی جے پی کا یہ اصول ہے کہ 75 سال سے زیادہ عمر کے افراد کو پارٹی یا حکومت میں کوئی عہدہ نہیں دیا جاۓ گالیکن پارٹی نے ان پر 78 سال کی عمر کے با وجود اعتماد کیا ہے اس کیلئے وہ پارٹی کی قیادت کے شکر گزار ہیں۔

انہوں نے کہا کہ 25 جولائی کو انہیں پارٹی اعلی کمان کی طرف سے ہدایت ملنے کی امید ہے  26 جولائی ،2021 کو   کرناٹک میں بی جے پی حکومت کے قیام کو دو  سال پورے ہونے جار ہے ہیں اس دن ایک مخصوص پروگرام کا اہتمام رہے گا – 26 جولائی کے بعد وہ اپنے آپ کو کر نا ٹک میں پارٹی کو منظم کر نے کے کاموں میں لگا دیں گے۔

اقتدار بچانے کی کوشش: ایک طرف وزیراعلی ایڈی یور پانے یہ اعلان کر دیا کہ وہ اعلی کمان کی ہدایت پر عمل کرتے ہوئے عہدے سے مستعفی ہو جائیں گے۔ دوسری طرف سیاسی حلقوں میں یہ مانا جا رہا ہے کہ وزیر اعلی کے عہدے سے ایڈی یور پا اتنی آسانی سے مستعفی ہونے والے نہیں ہیں۔ اگر مستعفی ہوں گے بھی تو اپنی شرطیں منوائیں گے۔ کہا جارہا ہے کہ انہوں نے بنیادی شرط یہ رکھی ہے کہ اگلا وزیراعلی جو بھی ہوگا اس کا بینہ میں ان کے فرزند کو نائب وزیر اعلی بنایا جاۓ – مانا جار ہا ہے کہ ایڈی یور پانے وزیر اعلیٰ بنے رہنے کیلئے ان کے کہنے پر کانگریس اور جے ڈی ایس چھوڑ کر بی جے پی میں آنے والے وزرا کواس بات کیلئے راضی کر لیا ہے کہ وہ بھی وزارت سے مستعفی ہو جائیں اور اعلیٰ کمان کو باور کروادیں کہ ایڈی یورپا نہیں تو وہ بھی نہیں۔  کا بینہ اجلاس کے فورا بعد ودھان سودھا میں یہ قیاس آرائی تیز ہورہی ہے کہ پارٹی بدلنے والے وزراء نے ایڈی نور پا کی تائید میں استعفی دینے کا فیصلہ لے لیا ہے۔ لیکن بعد میں ان وزراء نے استعفے کی خبروں کی تردید کی لیکن ایڈی یور پا کیلئے اپنی حمایت دہرا کر بی جے پی اعلی کمان کو حیرت میں ڈال دیا ۔

متبادل کی تلاش: ایڈی یور پا کی طرف سے اعلی کمان کے کہنے پر عہدے سے مستعفی ہو جانے کے اعلان کے بعد ریاستی بی جے پی حکومت کی قیادت کیلئے متبادل رہنماؤں کے ناموں پر غور و خوض شروع ہو گیا ہے ۔  بتایا جا تا ہے کہ بی جے پی قیادت اس کوشش میں ہے کہ کسی کٹر ہندوتوا چہرے کو وزیر اعلی کے عہدہ پر مقرر کیا جاۓ ۔ قیاس کیا جا رہا تھا کہ مرکزی وزیر براۓ پارلیمانی امور پر ہلا د جوشی کو وزیر اعلی بنایا جا سکتا ہے ۔ لیکن فی الحال مرکزی حکومت میں اہم مرتبہ پر فائز پر ہلا د جوشی نے علاقائی سیاست میں لوٹنے کی طرف توجہ دینے سے گریز کیا ہے۔ وزیراعلی کے عہدے سے مستعفی ہوجانے کے ایڈی یورپا کے اشارے کے بعد ایک نیا نام وز یر اعلی کی دوڑ میں ابھر کر سامنے آیا ہے ۔ یہ نام ہے بی جے پی کے قومی جنز ل سکریٹری اور چکمگلور کے رکن اسمبلی سی ٹی روی کا ہے – روی کو کر ناٹک میں بی جے پی کے کٹر ترین ہند توا چہرے کے طور پر دیکھا جا تا ہے جو آۓ دن اپنے متعصبانہ بیانات کیلئے سرخیوں میں رہتے ہیں۔ ان کے علاو و دھارواڑ کے رکن اسمبلی اروند بیلا کا نام بھی لیا جار ہا ہے جو مرکزی وزیر پر ہلاد جوشی کے اقرباء میں شمار کیے جاتے ہیں۔ ان کے علاوہ نائب وزیراعلی ڈاکٹر اشوتھ نارائن اور لکشمن ساودی کے نام بھی دوڑ میں شامل ہیں۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*

 
x

Check Also

غیر قانونی طور پر تعمیر شدہ تمام مذہبی مقامات کے تحفظ کے لئے اسمبلی میں منظور ہوا’کرناٹکا مذہبی مقامات تحفظ قانون’

بینگلورو: 22 ستمبر، 2021 (بھٹکلیس نیوز بیورو) ریاست کے عوامی مقامات پر ...