بنیادی صفحہ / تازہ خبریں / مینگلورو: رامناتھ رائے کا زمین ہتھیانے کے الزام پر پلٹ وار

مینگلورو: رامناتھ رائے کا زمین ہتھیانے کے الزام پر پلٹ وار

Print Friendly, PDF & Email

بھٹکلیس نیوز / 14 نومبر،2017

مینگلورو / (اسماعیل ضوریز) دکشن کنڑا ضلع کے انچارج وزیررامناتھ رائے نے  آج ایک اخباری کانفرنس منعقد کرتے ہوئے ان پر ہری کرشنا بنٹوال کی طرف سے  لگائے گئے سرکاری زمین ہتھیانے کے الزام پر پلٹ وار کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ جب ہری کرشنا کو پاڑٹی کی طرف سے پانچ مرتبہ شکست کا سامنا کرنا پڑا تو وہ بی جے پی میں شامل ہوگئے تھے، میں نے ہی ان کو واپس لانے اور ان کی سیٹ کو بچانے میں اہم رول  ادا کیا تھا  لیکن  ان کی طرف سے مجھ پر گائے گئے اس الزام کی وجہ سے مجھے بڑا دکھ پہنچا ہے اور میں نہیں جانتا کہ کس سبب کی وجہ سے انہوں نے یہ قدم اٹھایا ہے۔

انہوں نے خودپر لگے الزام کی صفائی دیتے ہوئے کہا کہ” میرے والد نے 1961 ء ،میں  کالیگے میں 100/ہیکڑ کے قریب زمین  خریدی تھی، جس میں کا ایک حصہ اس وقت کی سرکار کے حکمنامہ کے مطابق وہاں کرایہ پر رہنے والوں کو چلی گیا تھا  اور بقیہ زمین ہم بھائیوں میں تقسیم ہوگئی تھی، جس کے بعد میں نے اپنے بھائی سے اس کا حصہ بھی خرید لیا اور اب میں قانونی طور پر 15.22 ہیکڑ زمین کا مالک ہوں۔انہوں نے اپنی طرف سے کسی کی زمین ہتھیانے یا پھر سرکاری زمین پر قبضہ جمانے کی بالکل ہی نفی کی۔

انہوں نے اپنی بیوی کے نام پر زمین کے رجسٹر ہونے کی بھی صفائی دیتے ہوئے کہا کہ وہ اس کی جائیداد کی زمین ہے اور اس میں اس کی تین ہیکڑ کی زمین ہے جو کہ کمکی میں واقع ہے لیکن  اس کے اور اس کے بھائی کے درمیان چل رہے  تنازعہ کی بناء پر  یہ اے سی کی عدالت میں جس کے فیصلہ کا ہمیں انتظار ہے۔

 

x

Check Also

تصاویر: صد سالہ اجلاس کے پیش نظر انجمن کے ذمہ داران پر مشتمل ایک وفد نے کیا ساحلی پٹی کا دورہ