بنیادی صفحہ / تازہ خبریں / کرناٹک میں گرام پنچایت انتخابات کے نتائج کے اعلان کے بعد سیاسی پارٹیاں کر رہی اپنی اپنی جیت کا دعوٰی: بھٹکل میں ان امیدواروں نے درج کی جیت
علامتی تصویر

کرناٹک میں گرام پنچایت انتخابات کے نتائج کے اعلان کے بعد سیاسی پارٹیاں کر رہی اپنی اپنی جیت کا دعوٰی: بھٹکل میں ان امیدواروں نے درج کی جیت

Print Friendly, PDF & Email

کرناٹک کے 226 تعلقہ جات کے 5728 دیہی پنچایتوں کے انتخابات کے نتائج منظر عام پر آئے ہیں۔ ان انتخابات میں ریاست کی تین بڑی سیاسی پارٹیاں کانگریس، بی جے پی اور جے ڈی ایس اپنی اپنی جیت کا دعوٰی کررہی ہیں۔ دوسری جانب مسلم سیاسی جماعتیں ایس ڈی پی آئی اور ویلفیئر پارٹی آف انڈیا کی تائید کردہ کئی امیدوار منتخب ہوئے ہیں۔ کرناٹک ریاستی الیکشن کمیشن کے تحت 22 اور 27 دسمبر 2020 کو دو مرحلوں میں گرام پنچایتوں کیلئے انتخابات منعقد کئے گئے تھے۔ 30 دسمبر صبح 8 بجے سے ووٹوں کی گنتی کا عمل شروع ہوا۔ ان انتخابات میں کل 91339 نشستوں کیلئے تقریبا 2,22,814 امیدواروں نے حصہ لیا تھا۔

دیہی پنچایتوں کے انتخابات میں راست طور پر سیاسی پارٹیاں کو حصہ لینے کی اجازت نہیں ہے۔ یہ انتخابات غیر سیاسی ہوتے ہیں لیکن پنچایتوں کی تشکیل میں سیاسی جماعتوں کا عمل دخل ضرور رہتا ہے۔ آزاد امیدواروں کے ساتھ ساتھ سیاسی پارٹیوں کی تائید کردہ امیدوار ان انتخابات میں حصہ لیا کرتے ہیں۔ اسطرح دیہی پنچایتوں کے انتخابات غیر سیاسی رہنے کے باوجود سیاسی رنگ میں ڈھلے ہوئے نظر آتے ہیں۔

کانگریس پارٹی کے لیڈر سدارامیا نے کہا کہ دیہاتوں کے ووٹر ہمیشہ کانگریس کے ساتھ رہے ہیں۔ یہ روایت آج بھی جاری ہے۔ سدارامیا نے کہا کہ سب سے زیادہ کانگریس کی تائید کردہ امیدوار منتخب ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی اور ریاستی حکومتوں کی کسان مخالف پالیسیوں کا اثر پنچایت انتخابات پر دیکھنے کو ملا ہے۔ ووٹروں نے بی جے پی کو سبق سکھایا ہے۔ دوسری جانب گرام پنچایت انتخابات میں بی جے پی اپنی جیت کا دعوٰی کررہی ہے۔ بی جے پی کے ریاستی صدر نلین کمار کٹیل نے کہا کہ دیہاتوں کے ووٹروں نے بی جے پی کی ترقیاتی پالیسیوں کی حمایت کی ہے۔ بی جے پی کی سینئر لیڈر اور اڈپی چکمگلورو کی رکن پارلیمان شوبھا کارندلاجے نے انتخابات کے نتائج پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ زعفران کو مسلسل کامیابی مل رہی ہے۔ چاپلوسی کے بجائے ترقی کی جیت ہورہی ہے۔

علاقائی سیاسی جماعت جے ڈی ایس نے بھی اپنی جیت کا دعوٰی کیا ہے۔ میسور خطہ میں جے ڈی ایس کی تائید کردہ کئی امیدوار منتخب ہوئے ہیں۔

دیہی پنچایتوں کے انتخابات میں مسلم سیاسی پارٹیوں کی تائید کردہ کئی امیدوار بھی کامیاب ہوئے ہیں۔ سوشل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا (SDPI ) نے کہا کہ دکشن کنڑا، اڈپی، مڈکیری، گلبرگہ، ہاسن، بلاری، شمالی کینرا میں پارٹی کے تائید کردہ 224 امیدوار منتخب ہوئے ہیں۔ ویلفیئر پارٹی آف انڈیا نے کہا کہ 125 سیٹوں پر پارٹی کے تائید کردہ امیدواروں نے الیکشن لڑا تھا ان میں 44 امیدوار کامیاب ہوئے ہیں۔ کرناٹک ریاستی الیکشن کمیشن کے مطابق کئی نشستوں کے نتائج کا اعلان کیا جانا باقی ہے۔

بھٹکل میں ان امیدواروں کی ہوئی جیت 

بھٹکل کی بات کی جائے تو یہاں کی 16 گرام پنچایتوں کی 284نشستوں میں سے یہاں 17امیدوار بلا مقابلہ منتخب ہوئے تھے جبکہ دو وارڈس کے لئے کوئی پرچہ نامزدگی داخل نہیں ہوا تھا اس طور پر یہاں کی بقیہ 263نشستوں کے لئے 672امیدوار واں نے اپنی قسمت آزمائی جن میں سے ہاڈولّی گرام پنچایت حدود کے ککوڈ وارڈس سے نارائن مراٹھی نامی امیدوار نے 3ووٹوں سے جیت درج کی ہے جبکہ کائی کنی گرام پنچایت حدود کے دیوی کان وارڈس سے سبریش نامی امیدوارنے 230ووٹوں سے جیتنے میں کامیاب ہوئے ہیں ، وسنت نائک ، رما نائک اور رتنا موگیر بھی یہاں کامیاب ہوئےہیں ۔ کونار گرام پنچایت حدود کے ہدلور وارڈس سے ناگپّا گونڈ ا نے 11ووٹوں کے فرق سے جیت درج کی ہے، جبکہ اس پنچایت کے ہڈیل وارڈس سے کولی گونڈا اور اُدئیے نارائن نائک بھی جیت درج کرنے میں کامیاب ہوئےہیں۔

اسی طرح بیلور گرام پنچایت حدود کے مارکانڈیشور وارڈس سے گنپتی شنکر نائک نے جیت درج کی ہے ، اُدھر دوڈّا بلسے سے بھئیریا نائک نے 60ووٹوں سے جیت درج کی ہے ،گیتا ناگپا نائک، شری دھر نائک ۔ماولی -2کے ناڈور کیری سے مہیش نائک اور کملاوتی سیتارام دیواڑیگا۔ ہیبلے گرام پنچایت کے نرلیسر وارڈس سے سچن موگیر، سید علی ، ملک صدیق۔ شرالی گرام پنچایت کے کیسو منے وارڈس سے جناردھن دیواڑیگا، ناگراج نارائن دیواڑیگا، چوتھنی سے پونیتی دیواڑیگا ۔منڈلی گرام پنچایت حدود کے چوتھنی سے منگلا ناگیش سوبو ۔ماوین کوروے گرام پنچایت کے تلگوڈ وارڈس سے داس نائک ۔کوپا گرام پنچایت حدود کے اتی بار وارڈس سے ماستی سکرو گونڈ، بیٹکور وارڈس روی داس نائک، ناگما دیوما گونڈ۔ مٹھلی گرام پنچایت میں شیشگری کرشنا نائک، لکشمی نارائن نائک، رجنی وینکٹ رمن نائک، لکشمی گونڈا اور تلاندوارڈس سے گنپتی رام چندر نائک ، دیویا ماستپا نائک، جئے شری منجوناتھ نائک جیت حاصل کر چکے ہیں۔

x

Check Also

تیل کی قیمتوں میں مسلسل 11 ویں روز اضافہ، دہلی میں پٹرول 90 روپے فی لیٹر سے متجاوز: کرناٹک میں 93 کو پہنچا پٹرول

نئی دہلی: 19 فروری، 2021 (پی ٹی آئی)  ملک میں مسلسل 11 ...