بنیادی صفحہ / تازہ خبریں / لاک ڈاؤن کے بعد آئے بجلی بل میں زیادتی کے خلاف بھٹکل کے سماجی کارکنان کا زبردست اقدام: عوام کے مسائل حل ہونے کے امکانات

لاک ڈاؤن کے بعد آئے بجلی بل میں زیادتی کے خلاف بھٹکل کے سماجی کارکنان کا زبردست اقدام: عوام کے مسائل حل ہونے کے امکانات

Print Friendly, PDF & Email

بھٹکل: 5 اگست،20 (بھٹکلیس نیوز بیورو) لاک ڈاؤن کے بعد بجلی بل میں زیادتی کا مسئلہ بھٹکل کے عوام کے لیے درد سر بنا ہوا تھا جس کے لیے سماجی اداروں اور مقامی میڈیا سمیت کئی افراد نے اس بل میں کٹوتی اور اس پر نظر ثانی کے لیے کوششیں کیں۔
لیکن بھٹکل کے چند سماجی کارکنان پر مشتمل ایک ٹیم نے اس کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے مسئلہ کی تہہ تک جانے کی کوشش کی اور اس کا تفصیلی مطالعہ کرکے انتظامیہ سے بات چیت کی۔
ابو ہاجر، رویفع کولا اور ربیع رکن الدین و دیگر حضرات پر مشتمل اس ٹیم نے آن لائن اخباری کانفرنس کا انعقاد کرتے ہوئے اس سلسلہ میں ان کی جانب سے کی گئی کوششوں کا خلاصہ کیا۔ اس موقع پر ابو ہاجر صاحب نے گرافک کے ذریعہ میڈیا کے نمائندوں کو تمام تر تفصیلات فراہم کیں۔
انہوں ںے کہا کہ ان کی ٹیم نے لاک ڈاؤن کے بعد آئے بلوں کا گزشتہ آٹھ ماہ کے بلوں سے موازنہ کیا تو اس میں واضح فرق نظر آیا جس کی وجہ سے ان کو مزید تقویت ملی اور انہوں نے اس مسئلہ کو اعلی افسران تک پہنچایا جس کے بعد ان کی طرف سے کوئی تشفی بخش جواب نہیں ملا۔


انہو ں نے گراف کے ذریعے میڈیا کو بتایا کہ کل 31بجلی کے بلوں کا جائزہ لیا گیا جن میں سے گیارہ بلوں میں پچاس فیصد تک تو بارہ بلوں میں پچاس سے سو فیصد کے درمیان زیادتی دیکھنے میں آئی جبکہ ان میں سات معاملات ایسے تھے جن میں سو سے ڈیڑھ سو فیصد تک کا اضافہ دیکھنے میں آیا۔ اس سے بھی زیادہ چونکانے والی بات یہ تھی کہ ایک شخص کے بجلی بل میں 177 فیصد اضافہ ہوا ہے۔
انہوں نے کہا کہ ہم نے کوششیں جاری رکھیں جس کے اچھے نتائج نکل رہے ہیں۔
تاہم ان کوششوں کے بعد ایسا لگتا ہے کہ ان کی محنتیں کارگر ہورہی ہیں اور ہیسکام محکمہ نے اس پر نوٹس لینا شروع کردیا ہے جس میں سے بعض افراد کے بلوں پر نظر ثانی کی گئی ہے۔

 

x

Check Also

کرناٹک : مرسی اینجلس کو ایوارڈ دینے کے بعد بی بی ایم پی نے لیا واپس ، مچا ہنگامہ

بروہت بنگلورو مہانگر پالیکے(BBMP) کی جانب سے کورونا کے بہادروں کی توہین ...