بنیادی صفحہ / تازہ خبریں / کرناٹک میں ہنگامہ آرائی کے درمیان انسداد گئوکشی قانون ہوا صوتی ووٹ سے منظور

کرناٹک میں ہنگامہ آرائی کے درمیان انسداد گئوکشی قانون ہوا صوتی ووٹ سے منظور

Print Friendly, PDF & Email

بنگلورو:  8 فروری201(ذرائع) کرناٹک لیجس لیٹیو کونسل میں ہنگامہ آرائی اور اپوزیشن کانگریس اور جے ڈی ایس کے دھرنے کے درمیان انسداد گؤ کشی بل کو پاس کردیاگیا۔ کونسل میں دوپہر بعد وزیر برائے مویشی پالن پربھو چوہان نے اس بل کو پیش کیا جس کے بعد ایوان میں کانگریس اور جے ڈی ایس ممبروں نے مانگ کی کہ اس بل پر تفصیلی بحث کروائی جائے۔ایوان کی صدارت کرتے ہوئے ڈپٹی چیرمین پرانیش نے اس بل پر مختصر بحث کی اجازت دی اور ممبروں نے اس پر اپنے خیالات ظاہر کرنے شروع کئے۔کانگریس کے رکن سی ایم ابراہیم، بی کے ہری پرساد، نصیر احمد، نارائن سوامی اور دیگرنے اس قانون کی سخت مخالفت کی۔ اسی درمیان چیر مین نے بل کو ووٹنگ کیلئے پیش کیا۔ اس بل کو ووٹنگ کیلئے پیش کئے جانے کی مخالفت کرتے ہوئے کانگریس اور جے ڈی ایس ممبرس چیر مین کے آگے آکر دھرنا دینے لگے۔ انہی ہنگامہ خیزیوں کے درمیان ڈپٹی چیرمین نے بل پر ووٹنگ کروادی، کانگریس و جے ڈی ایس ممبرس نعرے لگاتے ہی رہ گئے اور بل صوتی ووٹ سے پاس ہو گیا۔ اس ہنگامہ کے درمیان کانگریس کے ممبر نصیر احمد نے ایوان میں بل کی کاپی پھاڑ کر پھینک دی۔ انسداد گؤ کشی قانون 2020کے ایوان بالامیں پاس ہونے کے ساتھ اب ریاست میں نئے قانون کو باقاعدگی مل گئی ہے۔ اس قانون کو لاگو کرنے کیلئے حکومت نے 5جنوری کو ایک آرڈی ننس جاری کیا تھا اب ایوان بالا میں بھی اس بل کی منظوری کے بعد آرڈی ننس کی ضرورت نہیں رہے گی بلکہ قانون بن جائے گا۔ اس بل پر بحث میں حصہ لیتے ہوئے سینئر کانگریس رکن سی ایم ابراہیم نے کہا کہ اس قانون کو اسمبلی میں پاس کر کے جب حکومت نے آرڈی ننس کے ذریعے جلد بازی میں اسے نافذ کیاتو اس کو عدالت میں چیلنج کیا گیا ہے۔ متعدد عرضیاں ہائی کورٹ میں زیر سماعت ہیں اس لئے عدالت کا فیصلہ ہونے تک انتظار کرلیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کے اس قانون کی مخالفت کیوں کی جا رہی ہے کہ اس کا سب سے زیادہ اثر کسانوں پر پڑتا ہے۔ اگر حکومت یہ سمجھتی ہے کہ اس قانون سے مسلمانوں کو پریشان کیا جا سکتا ہے تو یہ اس کی خام خیالی ہو گی۔ انہوں نے کہا کہ مسلمان کافی پہلے ہی سے گائے کا گوشت نہیں کھاتے۔ جہاں تک بیل اور دیگرجانوروں کا سوال ہے حکومت نے اس قانون کو بغیر سوچے سمجھے بنایا ہے۔

 

x

Check Also

مشہورعالم دین،مسلم پرسنل لاء بورڈ کے جنرل سکریٹری مولاناولی رحمانی کاانتقال،کل ہوگی تدفین

مشہور عالم دین، مسلم پرسنل لاء بورڈ کے جنرل سکریٹری اور امارت ...