بنیادی صفحہ / تازہ خبریں / لوک سبھا الیکشن 2019: اسدالدین اویسی اوراعظم خان سمیت 27 اراکین مسلم اراکین کریں گے پارلیمنٹ میں نمائندگی

لوک سبھا الیکشن 2019: اسدالدین اویسی اوراعظم خان سمیت 27 اراکین مسلم اراکین کریں گے پارلیمنٹ میں نمائندگی

Print Friendly, PDF & Email

لوک سبھا الیکشن 2019 کے نتائج کا اعلان کردیا ہے۔ ملک میں ایک بارپھر مودی سرکارآئی ہے۔ بی جے پی نے اپنے دم پر303 سیٹوں کے ذریعہ واضح اکثریت حاصل کرلی ہے جبکہ قومی جمہوری اتحاد (این ڈی اے) نے 353 سیٹیں حاصل کی ہیں۔ اپوزیشن جماعتوں کو ایک بارپھرناکامی کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ اس ضمن میں گزشتہ لوک سبھا الیکشن کے مقابلے اس بارمسلم اراکین پارلیمنٹ کی تعداد میں معمولی اضافہ ہوا ہے۔

پورے ملک میں اس بار27 مسلمانوں نے جیت حاصل کی ہے۔ جبکہ 2014 کے لوک سبھا انتخابات میں 20 مسلمان منتخب ہوکرپارلیمنٹ پہنچے تھے۔ اس طرح سے اس بار مسلم نمائندگی میں اضافہ ضرور ہوا ہے۔ لوک سبھا الیکشن 2019 میں مجلس اتحاد المسلمین کے سربراہ اورپارلیمنٹ میں مسلمانوں اورمظلوموں کی آوازاسدالدین اویسی کوتلنگانہ کے حیدرآباد سیایک بارپھرشاندارکامیابی حاصل ہوئی ہے۔ جبکہ ان کی ہی پارٹی کیٹکٹ پرمہاراشٹرکیاورنگ آباد میں امتیازسید جلیل نے شاندارکامیابی حاصل کی ہے۔ قابل ذکرہے کہ 40 سال بعد اس سیٹ پرکسی مسلم امیدوارکوکامیابی ملی ہے۔ اس سے قبل 1980 میں سلیم قاضی کامیاب ہوئے تھے۔ اس طرح سے اورنگ آباد سیٹ سے جیتنے والے امتیازجلیل دوسرے مسلمان ہیں۔

 اترپردیش کے سینئرمسلم رہنما اعظم خان نے رامپورسے سابق ممبرپارلیمنٹ جیا پردہ کو شکست دے کرشاندارجیت حاصل کی ہے۔ ان کے علاوہ سنبھل سے ڈاکٹر شفیق الرحمن برق، غازی پورسے مختارانصاری کے بھائی افضال انصاری، امروہہ سے کنوردانش علی، مراد آباد سے ڈاکٹرایس ٹی حسن، سہارنپورسے حاجی فضل الرحمن نے جیت حاصل کی ہے۔

عطرتاجراورآل انڈیا یونائیٹیڈ ڈیموکریٹک فرنٹ کے سربراہ مولانا بدرالدین اجمل کو ایک بار پھرکامیابی ملی ہے۔ جبکہ کانگریس کے عبدالخالق کو بارپیٹا سیٹ سے جیت ملی ہے۔ اس کے علاوہ بہارسے دومسلم اراکین پارلیمنٹ پہنچے ہیں۔ اس میں حج کمیٹی آف انڈیاکے چیئرمین چودھری محبوب علی قیصردوسری بارلوک جن شکتی پارٹی کے ٹکٹ پرکھگڑیا سے جیت کرپارلیمنٹ پہنچے جبکہ ڈاکٹرمحمد جاوید کشن گنج سے جیت حاصل کرنے میں کامیاب ہوئے ہیں۔

جموں وکشمیرمیں نیشنل کانفرنس کے فاروق عبداللہ،حسنین مسعودی اور محمد اکبرلون نے جیت حاصل کی ہے۔ جبکہ کیرلا میں سی پی آئی ایم کے اے ایم عارف اورمسلم لیگ کے ای ٹی محمد بشیراورپی کے کنہالیکٹی کامیاب ہوئے ہیں۔ پنجاب سے محمد صادق کامیاب ہوئے ہیں وہیں لکشدیپ میں محمد فیضل نے کامیابی حاصل کی ہے۔ مغربی بنگال سے چھمسلم اراکین پارلیمنٹ پہنچے ہیں۔ ابوہا شم خان چودھری، نصرت جہاں،خلیق الرحمن،ابوطاہرخان،اورساجدہ احمد، اپروپا پودرآفرین علی مغربی بنگال کی طرف سے مسلمانوں کی نمائندگی کریں گے۔جبکہ تمل ناڈو سے کے نواس کانی کو کامیابی ملی ہے۔

مسلم اراکین پارلیمنٹ کی فہرست

اسدالدین اویسی، اعظم خان، ڈاکٹر شفیق الرحمن برق، مولانا بدرالدین اجمل، ابوہا شم خان چودھری، عبدالخالق،کنوردانش علی، امتیازجلیل، ایس ٹی حسن، افضال انصاری، فضل الرحمن، چودھری محبوب علی قیصر، ڈاکٹرمحمد جاوید، فاروق عبداللہ، حسنین مسعودی، محمد اکبرلون، اے ایم عارف، ای ٹی محمد بشیر، محمد صادق، محمد فیضل، نصرت جہاں، خلیل الرحمن، ابوطاہرخان، ساجدہ احمد، اپروپا پودرآفرین، کے نواس کانی، پی کے کنہالیکٹی۔

x

Check Also

کرناٹک اسمبلی میں تحریک اعتماد پر ووٹنگ کے بغیر ہی کارروائی جمعہ تک ملتوی

بنگلور: کرناٹک کے گورنر وجوبھائي والا کی طرف سے ایوان جمعرات کو ...