بنیادی صفحہ / قومی / اتر پردیش: یوگی حکومت میں لو جہاد کے نام پر 14 افراد کے خلاف مقدمہ درج

اتر پردیش: یوگی حکومت میں لو جہاد کے نام پر 14 افراد کے خلاف مقدمہ درج

Print Friendly, PDF & Email

مئو: اترپردیش کے ضلع مئو میں دو مختلف مذاہب سے تعلق رکھنے والے عاشق جوڑے کے گھر سے بھاگ جانے کے بعد مئو پولس نے مبینہ لوجہاد پر کنٹرول کے دعوی کے ساتھ ریاستی حکومت کی جانب سے پاس کئے گئے تبدیلی مذہب قانون کے تحت 14افرادکے خلاف مقدمہ درج کیا ہے۔افسران کے مطابق لڑکا پہلے سے شادی شدہ ہے۔

 ایڈیشنل سپرنٹنڈنٹ آف پولس تربھون ناتھ ترپاٹھی نے جمعہ کو بتایا کہ ’’چریا کوٹ پولس اسٹیشن کے مولنا گنج گاؤں میں دو مختلف مذاہب سے تعلق رکھنے والے لڑکی اور لڑکا اپنے گھر سے فرار ہوگئے۔لڑکا پہلے سے شادی شدہ ہے۔ اس ضمن میں پولس نے تبدیلی مذہب قانون ایکٹ کے دفعات 366، 506 اور 3/5 کے تحت مقدمہ درج کر کے معاملے میں کارروائی شرو ع کردی ہے۔

 الزام ہے کہ پہلے سے شادی شدہ لڑکے نے دوسرے مذہب سے تعلق رکھنے والی لڑکی کو 30نومبر کو اس کی متوقع شادی سے قبل بہلا پھسلا کر اپنے ساتھ بھگا لے گیا۔اہل خانہ کو جیسے ہی اس کا پتہ چلا، انہوں نے اس کی اطلاع پولس کو دی۔لڑکی کے والد کی جانب سے تحریر دئیے جانے پر پولس نے اس ضمن میں ایف آئی آر درج کی ہے۔ جوڑے کا ابھی تک کوئی سراغ نہیں لگ سکا ہے۔ پولس انہیں تلاش کررہی ہے۔

x

Check Also

اتر پردیش اسمبلی گیلری میں لگائی گئی ’ساورکر‘ کی تصویر، تنازعہ شروع

اتر پردیش میں کانگریس اور سماجوادی پارٹی نے قانون ساز اسمبلی کی ...