بنیادی صفحہ / قومی / کشمیرمیں نوجوان کے قتل کے بعد کشیدگی، گھروالوں نے لگایا مبینہ گئورکشکوں پرالزام

کشمیرمیں نوجوان کے قتل کے بعد کشیدگی، گھروالوں نے لگایا مبینہ گئورکشکوں پرالزام

Print Friendly, PDF & Email

جموں وکشمیرمیں ڈوڈا ضلع کے بھدرواہ علاقے میں ایک شخص کے قتل کے بعد فرقہ وارانہ تشدد بھڑک گیا ہے۔ مہلوک کے اہل خانہ نے الزام لگایا ہے کہ گائے کی اسمگلنگ کے جھوٹے الزام لگاکرانہیں نشانہ بنایا گیا۔ حالانکہ ڈوڈا ضلع کے ڈی ایم نے الزامات کو مسترد کیا ہے۔ ڈوڈا ضلع انتظامیہ نے اس کے پیچھے گئورکشکوں کا ہاتھ ہونے سے انکارکیا اورکہا کہ کچھ لوگ حالات کوبھڑکانے کے لئے اس حادثہ کو فرقہ وارانہ رنگ دینے کی کوشش کررہے ہیں۔

انڈین ایکسپریس کے مطابق 50 سال کے نعیم احمد شاہ دو لوگوں کے ساتھ واپس گھرلوٹ رہے تھے۔ تبھی رات کے تقریباً دو بجے گولی مارکران کا قتل کردیا گیا۔ احمد شاہ کے ساتھ جارہے دوسرے شخص نے بتایا کہ کچھ لوگ پاس کی جھاڑی میں چھپے ہوئے تھے، تبھی انہوں نے یہ کہتے ہوئے حملہ کردیا کہ وہ لوگ گائے کے اسمگلرہیں۔

 اس کے بعد علاقے میں تشدد کی صورتحال پیدا ہوگئی۔ اہل خانہ نے لاش کو لینے سے منع کردیا اورکہا کہ جب تک ملزم کوگرفتارنہیں کیا جاتا تب تک وہ وہاں سے نہیں ہٹیں گے۔ اس کے بعد ان سب نے وہاں توڑپھوڑ شروع کردی۔ کئی گاڑیوں کونقصان پہنچایا گیا۔ کئی گھروں پرپتھربازی بھی شروع کردی گئی۔ علاقے میں امن بنائے رکھنے کے لئے فوج کوبلایا گیا ہے۔ ساتھ ہی اس علاقے میں کرفیوبھی لگادیا گیا ہے۔ اس درمیان پی ٹی آئی نے خبردی ہے کہ دولوگوں کوفی الحال گرفتارکرلیا گیا ہے۔ جبکہ 7 لوگوں کو پوچھ گچھ کے لئے حراست میں بھی لیا گیا ہے۔
x

Check Also

لکھنؤ: متنازعہ ہندو مہاسبھا لیڈر کملیش تیواری کا برسرِعام قتل

لکھنؤ: ہندو سماج پارٹی سے وابستہ اور ہندو مہاسبھا کے سابق صدر ...