بنیادی صفحہ / قومی / کشمیرمیں آرٹیکل 370 ہٹانے کے خلاف سپریم کورٹ پہنچی فاروق عبداللہ کی پارٹی نیشنل کانفرنس

کشمیرمیں آرٹیکل 370 ہٹانے کے خلاف سپریم کورٹ پہنچی فاروق عبداللہ کی پارٹی نیشنل کانفرنس

Print Friendly, PDF & Email

جموں وکشمیرمیں دفعہ 370 ہٹائے جانے کے بعد سے بڑھتی کشیدگی کے درمیان نیشنل کانفرنس نے سپریم کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹایا ہے۔ واضح رہے کہ نیشنل کانفرنس (این سی) اورپیپلزڈیموکریٹک پارٹی (پی ڈی پی) مرکزی حکومت کے اس فیصلے کی مسلسل مخالفت  کررہی ہیں۔ دونوں ہی پارٹیوں کا الزام ہے کہ حکومت کے اس قدم سے کشمیرکی امن وامان خراب ہوگی۔

نیشنل کانفرنس کے رکن پارلیمنٹ محمد اکبرلون اورحسنین مسعودی مرکزی حکومت کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ پہنچ گئے ہیں۔ لیڈروں کا کہنا ہے کہ مرکزی حکومت نے ریاست کی حکومتوں سے اس موضوع پربغیرکوئی مشورہ لئے فیصلہ کرلیا ہے۔ انہوں نے کشمیروادی میں امن بنائے رکھنے کے لئے عمرعبداللہ اورمحبوبہ مفتی کو نظربند کئے جانے کا بھی معاملہ سپریم کورٹ میں رکھا ہے۔

آرٹیکل 370 ہٹائے جانے کے بعد پہلے جمعہ کو جموں وکشمیرمیں امن کاماحول رہا۔ ریاست کے مختلف علاقوں میں لوگ جمعہ کی نمازادا کرنے گھرسے باہرنکلے۔ بغیرکسی خوف وہراس کے لوگوں نے مسجدوں میں نمازادا کی۔ حالانکہ یہ خدشہ ظاہرکیا جارہا تھا کہ جمعہ کے دن وادی میں امن وامان خراب ہوسکستا ہے۔

kashmir-22-2

دوسری جانب دہشت گرد مسعود اظہرنے دھمکی دیتے ہوئے کہا ہے کہ جموں وکشمیرسے آرٹیکل 370 ہٹانے کے بعد بھی ہندوستان اپنے منصوبوں میں کبھی کامیاب نہیں ہوسکے گا۔ دہشت گرد مسعود اظہرنے دعویٰ کیا ہے کہ وزیراعظم نریندرمودی نے کشمیرسے آئینی درجہ چھین کراچھا نہیں کیا۔ دہشت گرد مسعود اظہرنے دھمکی دیتے ہوئے کہا کہ مجاہدین اپنے مقصد کے قریب پہنچ چکے ہیں۔

x

Check Also

شاہین باغ احتجاج کاروں نے رکھے 7 مطالبات، مسلسل چوتھے روز بھی بات چیت کا نہیں نکلا کوئی نتیجہ

نئی دہلی۔ شاہین باغ میں سی اے اے، این آر سی اور این پی ...