بنیادی صفحہ / قومی / کلبھوشن جادھو کیس : ہندوستان کے حق میں آیا عالمی عدالت کا فیصلہ ، کلبھوشن کی پھانسی پر روک

کلبھوشن جادھو کیس : ہندوستان کے حق میں آیا عالمی عدالت کا فیصلہ ، کلبھوشن کی پھانسی پر روک

Print Friendly, PDF & Email

بین الاقوامی عدالت نے پاکستان کی جیل میں بند ہندوستانی شہری کل بھوشن یادو کی پھانسی کی سزا پر آج روک لگاتے ہوئے پاکستان کو اس فیصلے پر نظر ثانی کرنے اور اس کا جائزہ لینے کا حکم دیا۔ عدالت نے مسٹر یادو کے معاملے میں میرٹ کی بنیاد پر ہندوستان کے حق میں فیصلہ سنایا۔ عدالت نے کہا کہ پاکستان نے مسٹر یادو کو وکیل کی سہولت فراہم نہیں کراکر دفعہ 36(1) کی خلاف ورزی کی ہے اور پھانسی کی سزا پر اس وقت تک روک لگی رہنی چاہئے جب تک کہ پاکستان اپنے فیصلے پر نظر ثانی اور اس کا موثر جائز نہیں لے لیتا۔

عدالت کے آج کے فیصلے سے ہندوستان کو بڑی جیت حاصل ہوئی ہے حالانکہ عدالت نے مسٹر یادو کی محفوظ ہندوستان واپسی کی ہندوستان کے مطالبہ کو مسترد کردیا۔ بین الاقوامی عدالت نے کہا کہ پاکستان نے ہندوستان کے افسران سے مسٹر یادو سے نہ تو رابطہ کرنے دیا اور نہ ہی کسی کو جیل میں ان سے ملنے دیا گیا۔ مسٹر یادو کو وکیل کی سہولت بھی نہیں دی گئی جو ویانا کنونشن کے خلاف ہے ۔

 معاملے کی سماعت کے دوران ہندوستان نے عدالت کے سامنے مضبوطی سے اپنا موقف پیش کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان غیر ذمہ دارانہ رویہ کا مظاہرہ کیا اور بین الاقوامی معاہدوں اور سمجھوتوں کی خلاف ورزی کی ہے۔ ہندوستان نے پہلے بھی پاکستان پر ویانا کنونشن کے خلاف ورزی کا الزام لگایا تھا اور کہا تھا کہ پاکستان کو ہندوستانی شہری کی گرفتاری کے بارے میں فوراً اطلاع دینی چاہئے۔ہندوستان نے کہا کہ مسٹر یادو کو مبینہ طور پر تین مارچ 2016 کو گرفتار کیا گیا اور پاکستان کے خارجہ سکریٹری نے اسلام آباد میں ہندوستانی ہائی کمشنر کو 25مارچ کو اس گرفتاری کی اطلاع دی۔ پاکستان نے اس پر کوئی صفائی بھی نہیں دی کہ مسٹر یادو کی گرفتاری کی اطلاع دینے میں تین ہفتہ سے بھی زیادہ کا وقت کیوں لگا۔

x

Check Also

سابق مرکزی وزیرارون جیٹلی نہیں رہے، 66 سال کی عمرمیں ایمس میں آج لی آخری سانس

سابق وزیرمالیات اوربی جے پی کے سینئر لیڈرارون جیٹلی کا آج ہفتہ  ...