بنیادی صفحہ / خلیجی / سعودی عرب: مقدس مقامات پر مجمع کو کنڑول کرنے کے لئے مصنوعی ذہانت کا استعمال کرنے کی تیاری

سعودی عرب: مقدس مقامات پر مجمع کو کنڑول کرنے کے لئے مصنوعی ذہانت کا استعمال کرنے کی تیاری

Print Friendly, PDF & Email

ریاض: سعودی عرب میں حرمین شریفین کی زیارت، عمرہ اور حج کے خواہش مند افراد کو فراہم کی جانے والی خدمات میں اب مصنوعی ذہانت کی تکنیک کا بھی استعمال کیا جائے گا۔ العربیہ ڈاٹ نیٹ پر شائع رپورٹ کے مطابق اس بات کا اعلان سعودی عرب کی وزارت داخلہ میں پبلک سیکورٹی کے ڈائریکٹر لیفٹیننٹ جنرل محمد الباسمی نے ’مصنوعی ذہانت کے ہمہ جہت استعمال‘ کے عنوان سے منعقد ہونے والی پینل بحث کے دوران کیا۔

لیفٹیننٹ جنرل محمد الباسمی نے مجمع کو منظم کرنے سے متعلق امور پر بات چیت کرتے ہوئے بتایا کہ ہر سال مملکت کے اندر اور بیرون ملک سے زائرین بڑی تعداد میں حرمین شریفین سمیت دوسرے مقدس مقامات کی زیارت کرنے سعودی عرب آتے ہیں۔ زائرین کی بڑی تعداد کی وجہ سے ہونے والی بھیڑ کو کنڑول کرنے کے لئے جدید ٹیکنالوجی اور طریقوں کو بروئے کار لایا جا رہا ہے۔

جنرل الباسمی نے بتایا کہ کم سے کم 2.5 ملین معتمرین مکہ اور مدینہ حج کی غرض سے آتے ہیں۔ مملکت کے ویژن 2030 پروگرام کی روشنی میں زیادہ سے زیادہ حجاج اور متعمرین کی مملکت آمد کے لئے کوششیں جاری ہیں، ایسے میں پیدا ہونے والے ازدھام کو ٹیکنالوجی کے جدید طریقوں سے کنڑول کرنے کی کوششوں میں بہتری لائی جا رہی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ مقدس مساجد میں حال ہی میں متعارف کرائی جانے والی منصوعی ذہانت تکنیک سے بڑی تعداد میں زائرین کے مساجد میں داخلے اور باہر نکلتے وقت رش کنڑول کرنے سے متعلق فوری نوعیت کے فیصلوں میں بڑی مدد ملی ہے۔ اس ٹیکنالوجی کے ذریعے اس بات کو یقینی بنایا جاتا ہے کہ کسی مخصوص وقت اور جگہ پر اتنے ہی افراد جمع ہوں جنتی وہاں گنجائش ہوتی ہے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*