متحدہ عرب امارات کے دارالحکومت ابو ظبی میں پیر کو یورپ اور خلیجی ریاستوں کے مابین تعلقات کو مستحکم کرنے اور فرانس کے آنجہانی صدر یاک شیراک کی خدمات کے اعتراف میں ایک سڑک ‘یاک شیراک’کے نام موسوم کی گئی ہے۔

ابو ظبی کے الوور میوزیم میں سڑک کو سابق فرانسیسی صدر کے نام موسوم کرنے کے حوالے سے پروقار تقریب منعقد کی گئی جس میں اماراتی حکام، فرانسیسی عہدیدار، مختلف ممالک کے سفیر اور آنجہانی یاک شیراک کی صاجب زادی کلوڈ نے بھی شرکت کی۔

الوور میوزم کے باہر ایک بڑا بوڑد آویزا گیا تھا جس میں ‘شاہرا یاک شیراک’ کے الفاظ درج تھے۔ سڑک کے آغاز اور اختتام پر بھی اس طرح کے گائیڈ بوڈ لگائے گئے ہیں۔ یہ سڑک ابو ظبی میں جزیرہ السعدیات میں واقع ہے۔

میوزیم کے اندر ایک مختصر تقریب میں ، متحدہ عرب امارات کے بانی الشیخ زید بن سلطان النہیان کے ساتھ یاک شیراک کی تصاویر کو داخلی راہداری میں رکھا گیا جب کہ اطراف کی دیواروں پر بھی سامق اماراتی اور فرانسیسی عہدیداروں کی تصاویر آویزاں کی گئی تھیں۔

اس موقعے پر فرانس میں متحدہ عرب امارات کے سفیر علی عبداللہ الاحمد نے کہا کہ "یاک شیراک” کی یہ یادگار متحدہ عرب امارات کے مرکز میں ہمیشہ قائم رہے گ۔

سابق فرانسیسی صدر جنھوں نے کئی دہائیوں تک فرانسیسی سیاست میں نمایاں خدمات انجام دیں ستمبر میں 86 برس کی عمر میں انتقال کر گئے تھے۔

صحت کے مسائل

یاک شیراک نے سنہ 1995ء سے سنہ2007ء تک صدارت کا عہدہ سنبھالا اورایلیزیہ محل میں 12 سال گزارے۔ وہ اپنے سوشلسٹ پیش رو فرانکوئس میتران کے بعد سب سے زیادہ طویل عرصے تک فرانسیسی صدر رہے۔

یاک شیراک حالیہ برسوں میں شاذ و نادر ہی عوام میں سامنے آئے۔ بڑھتی عمر کے ساتھ انہیں بیماریوں نے گھیر لیا تھا۔

چیراک کی بیٹی کلوڈ نے اے ایف پی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ "مُجھے بہت فخر محسوس ہورہا ہے۔ امارات کے ساتھ ہمارے ملک مضبوط تعلقات گہری دوستی اور باہمی احترام کا رشتہ ہے۔”

آنجہانی شیراک کے دور سے متحدہ عرب امارات اور فرانس نے دفاع ، سیاست ، تجارت اور ثقافت میں مضبوط روابط برقرار رکھے ہیں۔