بنیادی صفحہ / کیریر اور تعلیمی خبریں / صدرجمہوریہ رام ناتھ کوند کا اے ایم یو میں تاریخی استقبال کیا جائے: ڈاکٹر جسیم محمد

صدرجمہوریہ رام ناتھ کوند کا اے ایم یو میں تاریخی استقبال کیا جائے: ڈاکٹر جسیم محمد

Print Friendly, PDF & Email
علی گڑھ ۔یہ خوشی کی بات ہے کہ 32برسوں کے بعد صدر جمہوریہ ہند علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے 7مارچ کو ہونے والے 65ویں جسلہ تقسیم اسناد میں مہمان خصوصی کی حیثیت سے شرکت کر رہے ہیں لیکن یہ افسوسناک بات ہے کہ ان کی شرکت اور ان کے مدعو کئے جانے کو سیاسی رنگ دیا جانے لگا ہے۔یہ باتیں علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے سابق میڈیا مشیر ڈاکٹر جسیم محمد نے کیں ۔انہوں نے کہا کہ طلبا کو یہ دھیان رکھنا چاہئے کہ صدر جمہوریہ اس یونیورستی کے وزیٹر ہیں اور ان کو کبھی بھی یونورستی آنے کا حق ہے۔ایک مہمان کے طور پر صدر جمہوریہ رام ناتھ کوند کسی کو بھی اپنے ساتھ لا سکتے ہیں۔

ڈاکٹر جسیم محمد نے کہا کہ طلبا کو اے ایم یو کی روایات اور مہمانوں کی عزت کا بھی خیال رکھنا چاہئے انہوں نے کہاکہ طلبا کے دھڑے کا صدر جمہوریہ کی آمد کو سیاسی عینک سے دیکھنا اے ایم یو کی روایات اور اور اس کے مفاد کے خلاف ہے۔

ڈاکٹر جسیم محمد نے کہا کہ صدر جمہوریہ رام ناتھ کوند کی اس طرح سے مخالفت پورے ملک میں ایک منفیپیغام دے رہا ہے جو ہماری تہذیب و ثقافت پر سوالیہ نشان لگا رہا ہے۔انہوں نے طلبا سے اپیل کی کہ وہ سر سید کی تعلیمات کو ہمیشہ دھیان میں رکھ کر نہ صرف صدر جمہوریہ کا شاندار استقبال کریں بلکہ ان کے ساتھ آئے مہمانوں کا بھی اپنے اخلاق و اطوار سے دل جیت کر ایک تاریخ رقم کردیں۔

ڈاکٹر جسیم محمد نے امید ظاہر کی کہ اے ایم یو کے طلبا یقیناً7مارچ کو ہونے والے 65ویں جلسہ تقسیم اسناد کو کامیاب بنائیں گے اور جلسہ تقسیم اسناد میں شریک ہونے والے صدر جمہوریہ اور اے ایم یو وزیتر رام ناتھ کووند کا اے ایم یو کی روایات کے مطابق استقبال کریں گے۔

x

Check Also

ہونہارطلبا کیلئے خوشخبری! ملک کی 10 یونیورسٹیوں سے اسکالرشپ حاصل کرنے کا بہترین موقع

نئی دہلی: یہ جانکاری ان طلبا کیلئے خوشخبری ہوسکتی ہے جو اقتصادی ...