بنیادی صفحہ / بھٹکل و اطراف / پری میٹرک اسکالرشپ کو نویں اور دسویں تک ہی محدود کرنے کے فیصلے کو منسوخ کرنے کی مانگ لے کر ایس آئی او  نے دیا بھٹکل میں میمورنڈم

پری میٹرک اسکالرشپ کو نویں اور دسویں تک ہی محدود کرنے کے فیصلے کو منسوخ کرنے کی مانگ لے کر ایس آئی او  نے دیا بھٹکل میں میمورنڈم

Print Friendly, PDF & Email

بھٹکل : 6 دسمبر،2022 (بھٹکلیس نیوز بیورو) پری-میٹرک اسکالرشپ، جو کہ ابھی تک میٹرک سے نیچے کے طلبہ کو ملتی تھی ، اسے نویں اور دسویں درجہ تک محدود کرنے کا اعلان گذشتہ روز مرکزی حکومت کی طرف سے کیا گیا تھا اور اس کا جواز پیش کرتے ہوئے کہا گیا تھا کہ درجہ اول سے آٹھویں تک تعلیم کو ’ایجوکیشن ایکٹ 2009‘ کے ذریعہ لازمی قرار دیا گیا ہے اور ہر بچہ کو ان درجات میں حکومت مفت تعلیم فراہم کرے گی۔ اس لیے اب ان درجات کے بچوں کو پری میٹرک اسکالرشپ نہیں دی جائے گی۔

اسی کے چلتے اسٹوڈنس اسلامک آرگنائزیشن آف انڈیا بھٹکل یونٹ نے یہاں  بھٹکل اےسی کے توسط سے ریاستی وزیر تعلیم کو ایک میمورنڈم سونپا  اور اس فیصلے کو اقلیتی طلبہ کے مخالف قرار دیتے ہوئے اس کو منسوخ کرنے کی مانگ کی  ۔

میمورنڈم میں اس کی بحالی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا گیا کہ حکومت آر ٹی ای ایکٹ  2009 کی آڑ میں اقلیتی طلبہ  کے ساتھ نا انصافی کررہی ہے کیوں کہ آر ٹی ای ایکٹ کے تحت طلبہ کو پڑھنے کی طرف  مائل کیا جاتا  ہے اور انہیں اس میں تعاون کیا جاتا ہے جس کی ایک شکل اسکالرشپ کی فراہمی بھی ہے ۔اگر حکومت اسی طرح اپنے فیصلے پر باقی رہتی ہے تو پھر اس سے اقلیتی طلبہ کا تعلیمی کردار متاثر ہوگا اور اس میدان میں ان کی نمائندگی کم ہونے لگی ۔

میمورنڈم میں ریاستی وزیر تعلیم سے درخواست کی گئی ہے کہ وہ اس میں مداخلت کریں اور طلبہ کی بھلائی کے خاطر حکومت سے اس فیصلے کو منسوخ کرنے کی مانگ کریں ۔

قابل ذکر ہے کہ پری میٹرک اسکالرشپ پہلے چھٹی جماعت سے دسویں جماعت تک کے بچوں کو دیا جاتا تھا۔ اس کے تحت 500 روپے سالانہ داخلہ فیس اور 350 روپے ٹیوشن فیس کی شکل میں دی جاتی تھی۔ علاوہ ازیں درجہ اول سے پانچویں تک کے بچوں کو 100 روپے ماہانہ اسکالرشپ دی جا رہی تھی اور چھٹی جماعت سے دسویں جماعت کے بچوں کو 600 روپے ماہانہ دیا جا رہا تھا۔ یہ اسکیم یو پی اے حکومت میں 08-2007 میں مسلمانوں کی معاشی پسماندگی کے پیش نظر ان میں تعلیم کے فروغ کے لیے شروع کی گئی تھی جس سے دیگر اقلیتیں بھی مستفید ہو رہی تھیں۔

اس موقع پر ایس آئی کے یونٹ سکریٹری طالش مشائخ، فارقلیط مانوی اور دیگر ممبران موجود تھے۔

 

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*