بنیادی صفحہ / بھٹکل و اطراف / مرکزی خلیفہ جماعت المسلمین کی سیرت مہم کے تحت بھٹکل کے صحافیوں سے کی گئی ملاقات

مرکزی خلیفہ جماعت المسلمین کی سیرت مہم کے تحت بھٹکل کے صحافیوں سے کی گئی ملاقات

Print Friendly, PDF & Email

بھٹکل: 30 اکتوبر، 20 (بھٹکلیس نیوز بیورو) مرکزی خلیفہ جماعت المسلمین بھٹکل کے زیر اہتمام جاری پندرہ روزہ سیرت النبی صلی اللہ علیہ وسلم کی مہم کے تحت شہر میں مختلف پروگرام منعقد ہورہے ہیں اور اسی کے تحت غیر مسلموں سے ملاقات کا سلسلہ بھی جاری ہے۔

اسی کی ایک کڑی کے طور پر جمعرات کے روز شہر بھٹکل کے صحافیوں کے ساتھ محکمہ شرعیہ میں ایک نشست منعقد کی گئی جس میں صحافیوں کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی۔

اس موقع پر جناب طلحہ سدی باپا صاحب نے صحافیوں کے سامنے توحید، رسالت اور آخرت کے موضوع پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے انہیں اس سلسلہ میں اسلام کی تعلیمات سے روشناس کرایا۔ انہوں نے کہا کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم صرف مسلمانوں کے نبی نہیں ہیں بلکہ وہ پوری دنیا کے لیے نبی رحمت بن کر آئے تھے اور اسی طرح ان کی تعلیمات بھی پوری دنیا کے لوگوں کے لیے ہیں۔

انہوں نے اس موقع پر سیرت کی اس مہم کو جاری کرنے کے مقصد کو بھی واضح کیا اور صحافیوں سے گزارش کی کہ وہ بھی سیرت کا مطالعہ کریں اور اس سلسلہ میں کسی بھی طرح کی ضرورت پڑنے پر محکمہ  شرعیہ سے رابطہ کریں۔

مولانا ارشاد نائطے ندوی نے اس موقع پر رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی امانت و دیانت کے تعلق سے اپنے خیالات ظاہر کیے اور اس کے ذریعے برادران وطن تک دعوت کا پیغام پہنچانے کی کوشش کی۔

اس موقع پر صحافیوں نے بھی اپنے خیالات ظاہر کرتے ہوئے ایسی نشستوں کو منعقد کرنے کی ضرورت پر زور دیا اور اس طرح کی باہم ملاقاتوں سے غلط فہمیوں کے دور ہونے کا ذکر کیا۔مغرب سے قبل یہ نشست خوشگوار ماحول میں اختتام کوپہنچی۔

مزدوروں کے ساتھ خصوصی نشست: مغرب بعد محکمہ شرعیہ کی عمارت کے سامنے کام کر رہے مزدوروں کے ساتھ ایک نشست منعقد کی گئی تھی جس میں جناب رضا مانوی صاحب نے مزدوروں کے تعلق سے رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کے ارشادات کو بیان کیا اور محنت و رزق حلال کی فضیلت کو ان مزدوروں کے سامنے پیش کیا۔

 

x

Check Also

نمّا ناڈو اوکٹہ  کے زیر اہتمام سرکاری ملازمتوں میں مسلمانوں کی بھرتی کے لیے کی جارہی کوششیں قابل تقلید ہیں: عنایت اللہ شابندری

گنگولی: 29 نومبر،20 (بھٹکلیس نیوز بیورو/راست)’’سرکاری نوکریوں میں اس وقت مسلمانوں کی ...