بنیادی صفحہ / بھٹکل و اطراف / اگر مرکزی حکومت کو واقعی مسلم خواتین ہمدردی ہے تو انہیں ریزرویشن دے؛ فاطمہ مظفر

اگر مرکزی حکومت کو واقعی مسلم خواتین ہمدردی ہے تو انہیں ریزرویشن دے؛ فاطمہ مظفر

Print Friendly, PDF & Email

بھٹکل: 7 جنوری،2019 (بھٹکلیس نیوز بیورو) آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کے خواتین ونگ کی ممبر محترمہ فاطمہ مظفر صاحبہ انجمن کے صد سالہ اجلاس میں شرکت کے لیے کل بھٹکل آئی ہوئی تھی ۔ انہوں نے اس موقع پر اخباری نمائندوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ حکومت مسلم خواتین کے تعلق سے ہمدردی جتانے کا مکھوٹا لگائے ہوئے اپنا الو سیدھا کر رہی ہے اور یہ صرف اور صرف سیاسی مفاد کے لیے کیا جارہا ہے۔

انہوں نے آگے کہا کہ اگر حکومت کو مسلم خواتین کی اتنی ہی فکر ہے تو پھر ایسے حالات میں مسلم خواتین کو ریزرویشن اور دوسری سرکاری مراعات ملنی  چاہئے ۔

محترمہ نے کہا کہ مسلمان ملک میں اس وقت کافی پسماندہ زندگی گزار رہے ہیں اور ان کی اکثریت غریبی سے دوچار ہے۔ان کی کسی بھی اعلی شعبے میں نمائندگی نہ کے برابر ہے ،اگر ایسے میں حکومت ہمیں تعاون کرتی ہے اور ہمیں استحکام عطا کرتی ہے تو پھر اس وقت کہا جاسکتا ہے کہ حقیقت میں حکومت مسلمانو ں کو فکر ہے۔

بھٹکلیس ڈاٹ کوم کی جانب سے طلاق ثلاثہ بل کے تعلق سے سوال کیے جانے پر محترمہ نے کہا کہ مرکزی حکومت کہتی ہے کہ مسلم ممالک میں تین طلاق پر پابندی ہے ۔ لیکن ہمیں دوسرے ملکوں سے سروکار نہیں ہے ہم کو ہماری شریعت اور ہمارا ملک پیارا ہے اور ہم ہمارے حق کے لیے لڑائی جاری رکھیں گے۔

اس موقع پر انہوں نے مرکزی حکومت کی بہت ساری پالیسیوں کو غلط ٹہراتے ہوئے مسلم خواتین کو اس سلسلہ میں ہوشیار رہنے کی اپیل کی۔

x

Check Also

مجلس اصلاح و تنظیم بھٹکل کے 10/مارچ کو سہ سالہ انتخابات؛26/فروری تک داخل کرسکتے ہیں نامزدگی پرچہ

بھٹکل: 21 فروری، 19 (بھٹکلیس نیوز بیورو) بھٹکل و اطراف کے مسلمانوں ...