بنیادی صفحہ / بھٹکل و اطراف / کورونا کی تازہ صورتحال پر بات کرنے ریاستی وزیر اعلیٰ کی اعلیٰ افسران اور کویڈ اڈوائزری  کمیٹی سے ورچوئل ملاقات: جنوری کے آخر تک جاری رہیں گی موجودہ پابندیاں

کورونا کی تازہ صورتحال پر بات کرنے ریاستی وزیر اعلیٰ کی اعلیٰ افسران اور کویڈ اڈوائزری  کمیٹی سے ورچوئل ملاقات: جنوری کے آخر تک جاری رہیں گی موجودہ پابندیاں

Print Friendly, PDF & Email

بینگلورو: 11 جنوری 22 (بھٹکلیس نیوز بیورو) وزیر اعلیٰ  بسواراج بومائی کی طرف سے آج  منگل کو شہر کے آر ٹی نگر میں واقع ان کی نجی رہائش گاہ پر اعلیٰ سرکاری عہدیداروں اورکویڈمشاورتی کمیٹی کے ارکان کے ساتھ ریاست میں کووِڈ-19 کی وبائی صورتحال کا جائزہ لینے کے لیے ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ طلب کی گئی تھی  جس میں کورونا کے بڑھتے ہوئے معاملات کو دیکھتے ہوئے  ریاستی حکومت کی طرف سے عائد موجودہ  پابندیوں کو جنوری کے آخر تک جاری رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ۔اس سے قبل ریاست میں جاری  روزانہ رات کا کرفیو اور ویک اینڈ لاک ڈاؤن  کی پابندیاں 19 جنوری تک ختم ہونے والی تھیں۔

اس ورچوئل  میٹنگ میں صحت اور خاندانی بہبود کے وزیر ڈاکٹر کے سدھاکر، جو طبی تعلیم کے بھی انچارج ہیں، وزیر تعلیم بی سی ناگیش، وزیر داخلہ آراگا جنیندرا، چیف سکریٹری پی روی کمار، تکنیکی مشاورتی کمیٹی کے چیئرمین ڈاکٹر سدرشن بلال اور دیگر ارکان کے ساتھ ساتھ دیگر سینئر سرکاری افسران نے شرکت کی۔

اسکولوں کو بند کرنے کا اختیار ڈپٹی کمشنر کے ہاتھ میں ہوگا: میٹنگ میں یہ بھی فیصلہ کیا گیا کہ اضلاع کے ڈپٹی کمشنروں کو یہ اختیار دیا جائے گا کہ وہ اپنے متعلقہ اضلاع میں کووڈ پازیٹیوٹی کی شرح اور بلاک ایجوکیشن آفیسرو تعلقہ ہیلتھ آفیسر کی رپورٹس کی بنیاد پر اسکولوں کو بند کرنے کا فیصلہ کریں۔ اس موقع پر  اسکولی  بچوں کی حفاظت کو یقینی بنانے پر زور دیا گیا۔

تعلیم اور صحت کے محکموں کو ہدایت دی گئی ہے کہ وہ ریاست بھر کے اسکولوں میں  پندرہ دن میں ایک بار مشترکہ طور پر تمام طلباء کی صحت عامہ کی جانچ کریں۔تعلقہ کے ساتھ ساتھ ضلع اسپتالوں سے کہا گیا ہے کہ وہ کووڈ سے متاثرہ بچوں کے علاج کے لیے چلڈرن وارڈ اور آئی سی یو کو محفوظ رکھیں۔اس کے ساتھ ساتھ ڈسٹرکٹ ہیلتھ افسران کو بھی ہدایت کی گئی ہے کہ وہ کووڈ پازیٹو بچوں کے علاج کے لیے ضروری ادویات کے وافر سٹاک کو یقینی بنائیں۔

میٹنگ  میں  سینئر پولیس افسران اور ڈپٹی کمشنروں کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ تمام عوامی مقامات پر کووڈ پابندیوں کو سختی سے نافذ کریں۔

 

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*