بنیادی صفحہ / بھٹکل و اطراف / حافظ ابراہیم بن فیصل عابدہ کے سانحۂ ارتحال پر جامعہ اسلامیہ بھٹکل میں تعزیتی نشست

حافظ ابراہیم بن فیصل عابدہ کے سانحۂ ارتحال پر جامعہ اسلامیہ بھٹکل میں تعزیتی نشست

Print Friendly, PDF & Email

بھٹکل: 14 جولائی، 19 (بھٹکلیس نیوز بیورو) جامعہ اسلامیہ بھٹکل کے ایک طالب علم حافظ ابراہیم بن فیصل عابدہ کے کم عمری میں حادثاتی موت کے بعد جامعہ اسلامیہ میں آج بعد نماز ظہر ایک تعزیتی نشست کا انعقاد ہوا۔
مرحوم کی اچھائیوں کو گناتے ہوئے مہتمم جامعہ مولانا مقبول صاحب ندوی نے کہا کہ اللہ نے ہمارا انتخاب دین کی تعلیم کے لیے کیا ہے اس راہ میں موت بھی آجائے تو اللہ کے یہاں اس کے بڑے مقامات ہیں، نیز اللہ نے ہمیں تقدیر پر ایمان کے ساتھ تدبیر کا مکلف کیا ہے اس لیے ہمیں خطرات کی جگہوں سے دور رہنا ہے اور اپنی جان کی حفاظت کرنی ہے،
استاد جامعہ مولانا فواز صاحب ندوی نے اس کی نمایاں خوبیوں کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ حافظ ابراہیم بڑا ہی با ادب تھا، استاد کی ڈانٹ کو اپنے لیے باعث خیر سمجھتا تھا، پڑھائی میں یکسورہتا، زیادہ ذہین تو نہیں تھا مگر اس نے اپنی کمزوریوں کو اپنی محنت سے ہرایا اور امتحان میں اچھے نمبرات سے کامیابی حاصل کی۔ صلاحیت کو بنانے میں جو مشکلات آئیں اس کا سامنا کیا یہی ترقی کا راز ہے۔
مولاناحافظ عمران صاحب اکرمی نے اس کی اطاعت و فرمانبرداری کی مثالیں دیں اور نم آنکھوں سے اس کی خوبیوں کو گنایا۔
اسی طرح مولانا شعیب صاحب ندوی نے ان کے والد صاحب کو صبر کا دامن تھامے رکھنے اور اپنی دیگر اولاد کی بھی ایسی ہی تربیت کرنے کی تلقین کی۔
مولانا فیض صاحب ندوی نے اپنے تاثرات میں مرحوم کو محنتی اور با ادب قرار دیتے ہوئے کہا کہ بے ادبی ایسی خطرناک چیز ہے جو آدمی کی ذہانت و صلاحیت دونوں کو ختم کردیتی ہے، حادثات ہمیں سبق دیتے ہیں اور تنبیہ کرتے ہیں کہ ہم اپنی جان کی حفاظت کریں یہ اللہ کی امانت ہے۔
ان کے والد جناب فیصل صاحب عابدہ نے اللہ کے فیصلہ پر راضی ہوتے ہوئے اپنے بیٹے کے حق میں دعائے مغفرت کی درخواست کی، اور اس کی دیگر اچھائیوں والدین کی خدمت، گھر کے کام کرنا، برائیوں سے دور رہنا، بڑوں کا ادب کرنا وغیرہ کا تذکرہ کرتے ہوئے طلبہ کو یہ نصیحت کی کہ تعلیم کے ساتھ دعوت کے کام سے جڑے رہیں تاکہ آپ کا علم دوسروں کے لیے روشنی کا ذریعہ بنے۔
نشست کے اختتام پر مہتمم جامعہ نے ان سبھوں کا شکریہ ادا کیا جنھوں نے حافظ ابراہیم کی میت کی تلاش میں اپنا تعاون پیش کیا اور ان کے حق میں دعائے خیر فرمائی۔ اس موقع پر طلبہ و اساتذہ اور سرپرست کے علاوہ متعلقین کی ایک تعداد شریک رہی۔
نشست کا آغاز سید نبیغ برماور کی تلاوت سے ہوا اور صدر جامعہ مولانا محمد اقبال صاحب ملا ندوی کے صدارتی کلمات اور دعا پر نشست کا اختتام ہوا۔

x

Check Also

انجمن بوائز ہائی اسکول کی نئی عمارت کا افتتاح

بھٹکل: 18 اگست، 19 (بھٹکلیس نیوز بیورو) انجمن حامئی مسلمین کے صد ...