بنیادی صفحہ / بھٹکل و اطراف / انجمن کالج میں مسلم اقلیتی تعلیمی اداروں کے مسائل،چیلنجس اور حل ‘کے موضوع پر  دو روزہ سیمنار کا آغاز؛مقررین نے سوچ کو وسیع کرنے اور تعلیمی معیار کو بڑھانے کے دیے مشورے؛انجمن میں لاء کالج کی جلد ہوگی شروعات

انجمن کالج میں مسلم اقلیتی تعلیمی اداروں کے مسائل،چیلنجس اور حل ‘کے موضوع پر  دو روزہ سیمنار کا آغاز؛مقررین نے سوچ کو وسیع کرنے اور تعلیمی معیار کو بڑھانے کے دیے مشورے؛انجمن میں لاء کالج کی جلد ہوگی شروعات

Print Friendly, PDF & Email

بھٹکل: 17 اگست، 19 (بھٹکلیس نیوز بیورو)  انجمن حامئی مسلمین بھٹکل کی صد سالہ تقریبات کی ایک کڑی کے طور پر آج انجمن انجنئیرنگ کالج کے سیمنار ہال میں مسلم اقلیتی تعلیمی اداروں کے مسائل،چیلنجس اور حل ‘کے موضوع پر دو روزہ سیمنار کاا آغاز ہوا جس میں مہمان خصوصی کے طور پر سید محمد بیری  صاحب نے شرکت کی۔ اس موقع پر انجمن کے ذمہ داران کی جانب سے آئندہ تعلیمی سال سے لاء کالج  کی شروعات کا اعلان کیا گیا اور لاء کالج کے لئے چینائی کے کریسنٹ انسٹی ٹیوٹ آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کے ساتھ ایک میمورنڈم (میمورنڈم آف انڈر اسٹینڈنگ، یعنی MoU) پر دستخط  بھی کئے گئے۔

مہمان خصوصی کی حیثیت سے شریک جناب محمد بیری صاحب نے اس موقع پر انجمن کے کاموں کی سراہنا کی اور کہا کہ ذمہ داران ہمیشہ معیاری تعلیم کو اہمیت دیں تاکہ طلبہ قابل بن کر نکلیں اور حکومتی سطح پر پہنچیں۔انہوں نے اس موقع پر اقلیتی اداروں کے   ذمہ داروں کو کہا کہ وہ اپنی سوچ کو وسیع کریں اور  تمام طبقات کو ساتھ لے کر اپنے آپ کو اداروں کو کامیاب بنانے کے لیے وقف کریں۔

بھٹکل کے اسسٹنٹ کمشنر  جناب ساجد ملا صاحب نے کہا کہ ہمارے نوجوان اعلیٰ تعلیم تو حاصل کرتے ہیں لیکن سیول سرویسس جیسے امتحانات میں ان کی نمائندگی دکھائی نہیں دیتی یا پھر بہت ہی کم نمائندگی ہوتی ہے۔انہوں نے ذمہ داران سے درخواست کی کہ وہ موجودہ دور کے نوجوانوں کو آئندہ کے لیے تیار رکھیں تاکہ آگے جاکر انہیں کوئی تکلیف نہ ہو۔انہوں نے اپنے اسکولوں میں ایسے امتحانات کے لیے ہفتہ میں ایک مرتبہ ہی صحیح طلبہ کو رہنمائی کرنے کی بھی ترغیب دی۔

ینوپویا یونیورسٹی مینگلور کے اسلامک اسٹڈیز  اینڈ ریسرچ شعبہ کے ہیڈ  ڈاکٹر جاوید جمیل   نے بھی موجودہ حالات پر تبادلہ خیال کرتے ہوئے مفید باتیں بتائیں۔

اس سیمینار کی افتتاحی تقریب  پروفیسر عبدالمقیت  کی تلاوت کلام پاک سے  شروع ہوئی۔ جس کے بعد صدسالہ جشن کی تقریبات کے کنوینر عبدالرقیب ایم جے ندوی نے  استقبالیہ  کلمات پیش کیے،  انجینرنگ کالج کے پرنسپال  ڈاکٹر ایم اے بھاوی کٹے نے  سیمینار کی غرض و غایت پیش کی تو انجمن کے ایڈیشنل سکریٹری اسحاق شاہ بندری نے  مہمانوں کا تعارف پیش کیا۔انجمن کے جنرل سکریٹری صدیق اسماعیل نے انجمن کا تعارف اور اس کی سرگرمیوں سے مہمانان کو روشناس کرایا۔انجمن کے صدر جناب عبدالرحیم جوکاکو نے صدارت کی  اور   انجمن  پروفیشنل کالج سکریٹری آفتاب قمری نے آخر میں شکریہ ادا کیا۔

افتتاحی تقریب کے بعد سیمنار کا باقاعدہ آغاز ہوا جس میں شام تک ماہرین تعلیم نے مختلف موضوعات پر اپنے خیالات پیش کرتے ہوئے اقلیتی تعلیمی اداروں کو درپیش چیلنجس اور ان کے حل کے تعلق سے روشنی ڈالی۔

x

Check Also

بھٹکل میں فاریسٹ افسران کی زبردستیوں کے خلاف عوام کا احتجاجی اجلاس؛ سینکڑوں افراد نے کی شرکت

بھٹکل: 10 اکتوبر، 19 (بھٹکلیس نیوز بیورو) بھٹکل و اطراف میں فوریسٹ ...