بنیادی صفحہ / مصنف کی تحاریر : اطھرہاشمی

مصنف کی تحاریر : اطھرہاشمی

خبرلیجئے زباں بگڑی — مجہول اور مہتمم بالشان۔۔۔ تحریر: اطہر ہاشمی

جسارت کے ایک کالم نگار نے ’’مجہول الحواس‘‘ کی ترکیب استعمال کی ہے۔ اگر مجہول کا مطلب معلوم ہوتا تو یہ سہو نہ ہوتا۔ مجہول کا مطلب ہے نامعلوم، غیر معلوم، وہ فعل جس کا فاعل معلوم نہ ہو۔ علاوہ ...

مزید پڑھیں »

خبرلیجئے زباں بگڑی۔۔۔ ایک کالم طوعا و کرہا ۔۔۔تحریر: اطہر ہاشمی

سمندر پار سے محترم عبدالمتین منیری کے توسط سے ایک خاتون عابدہ رحمانی کا خط یا اعتراض موصول ہوا ہے۔ کاکسس بازار کے حوالے سے وہ لکھتی ہیں ’’یہ نام کاکسس بازار ہے اور اسی نام سے معروف ہے cox’s ...

مزید پڑھیں »

خبرلیجئے زباں بگڑی ۔ کاکس یا کاسس بازار — تحریر : اطہر ہاشمی

برعظیم پاک و ہند کے مشہور شہروں کے صحیح نام اب صحافیوں کی نوجوان نسل کو یاد بھی نہیں رہے، جب کہ چند برس پہلے تک یہ صورتِ حال نہیں تھی۔ آج کل روہنگیا مہاجروں کے حوالے سے بنگلادیش کے ...

مزید پڑھیں »

گھڑوں پانی میں ڈوبنا ۔۔۔ تحریر : اطہر ہاشمی

فرائیڈے اسپیشل کے تازہ شمارے (15 تا 21 ستمبر) میں ایک نیا محاورہ پڑھنے میں آیا۔ مولانا مفتی محمد اشرف علی باقویؒ کے بارے میں ایک بہت معلوماتی مضمون شائع ہوا اور مرحوم کا تعارف کرانے والے اردو اور عربی ...

مزید پڑھیں »

ادھم یا اودھم ۔۔۔ تحریر : اطہر ہاشمی

دیکھتے ہیں ’’چراغ تلے‘‘ کیا کیا کچھ ہے۔ 11 ستمبر کے اخبار جسارت کے ادارتی صفحہ پر حسیب عماد کا مضمون ہے جس میں وہ لکھتے ہیں ’’ایک بندر شیر کی خدمت پر معمور تھا۔‘‘ موصوف کو شاید ’مامور‘ اور ...

مزید پڑھیں »

تلفظ کی قرقی ۔۔۔۔ تحریر : اطہر ہاشمی

گزشتہ دنوں ہر ٹی وی چینل پر رینجرز کے ایک افسر کا نام ’قمبر رضا‘ چل رہا تھا۔ اخبارات نے بھی یہی شائع کیا، اور ممکن ہے کہ یہ افسر اگر کبھی اردو میں اپنا نام لکھتے ہوں تو اسی ...

مزید پڑھیں »

پھولوں کا گلدستہ ۔۔۔۔ تحریر : اطہر ہاشمی

’سِوا‘ اور ’علاوہ‘ کے استعمال کے حوالے سے ہم پہلے بھی لکھ چکے ہیں لیکن یہ غلطی عام ہوتی جارہی ہے۔ یعنی جہاں ’سِوا‘ لکھنا چاہیے وہاں ’علاوہ‘ لکھا جارہا ہے جس سے مفہوم بدل جاتا ہے۔ مثلاً آج کل ...

مزید پڑھیں »

نوچی کا بھونڈا استعمال— تحریر : اطہر ہاشمی

جسارت کے ایک بہت مقبول اور قارئین کے پسندیدہ کالم نگار، ادیب وشاعر ’’بالخصوص‘‘ کو عموماً باالخصوص لکھتے ہیں، یعنی ایک الف کا اضافہ کردیتے ہیں۔ لیکن اس سے تلفظ بھی بگڑ جاتا ہے اور با۔الخصوص ہوجاتا ہے۔ یہ ایسے ...

مزید پڑھیں »

فرنگی بیماریاں۔ اطہر ہاشمی

ہمارے ہاں بہت کچھ باہر سے آتا ہے حتیٰ کہ کبھی کبھار وزیراعظم بھی۔ ہمارے اداروں کے نام بھی فرنگی ہیں۔ اور تو اور بیماریاں بھی انگریزی یا لاطینی میں حملہ آور ہوتی ہیں۔ چکن گونیا کا شکار ہوئے تو ...

مزید پڑھیں »

باقر خوانی بروزن قصّہ خوانی ۔ ۔۔ تحریر: اطہر ہاشمی

اسلام آباد سے ایک صحافی نے، جو اب تک خوب سینئر ہوچکے ہیں، پچھلے کالم میں دیے گئے شعر میں تصحیح کی ہے۔ ہم نے مصرع میں ’بیٹے‘ کو ’بچے‘ بنا دیا تھا یعنی ’’کہ جن کو پڑھ کے بچے ...

مزید پڑھیں »

لیے اور لئے کا آسان نسخہ — تحریر : اطہر ہاشمی

اردو کے لیے مولوی عبدالحق مرحوم کی خدمات بے شمار ہیں۔ اسی لیے انہیں ’’باباے اردو‘‘کا خطاب ملا۔ زبان کے حوالے سے اُن کے قول ِ فیصل پر کسی اعتراض کی گنجائش نہیں۔ گنجائش اور رہائش کے بھی دو املا ...

مزید پڑھیں »

نیک اختر ۔۔۔۔ تحریر : اطہر ہاشمی

ہمارے صحافی اور ادیب کسی بھی لفظ کے آگے ’’یت‘‘ (ی ت) بڑھاکر اسم صفت بنالیتے ہیں۔ اس طرف پروفیسر علم الدین نے بھی توجہ دلائی تھی۔ ایک مضمون میں ’’معتبریت‘‘ پڑھا۔ غنیمت ہے کہ اعتباریت نہیں لکھا۔ لیکن اعتبار ...

مزید پڑھیں »

تار ۔ مذکر ہے یا مونث ؟ ۔۔۔۔۔ تحریر : اطہر ہاشمی

تار۔ مذکر یا مونث؟ اردو میں ہم ایسے کئی الفاظ بے مُحابا استعمال کرتے ہیں جن کا مفہوم اور محل واضح ہوتا ہے لیکن کم لوگ جن میں ہم بھی شامل ہیں‘ ان الفاظ کے معانی پر غور کرتے ہیں۔ ...

مزید پڑھیں »

فوج کا سپہ سالار ۔۔۔ از :اطہر ہاشمی

آج پہلے اپنی خبر لیتے ہیں۔ گزشتہ دنوں جسارت میں ایک مضمون شائع ہوا جس میں مضمون نگار نے بغیر کسی تردد کے ’’بے مہابہ‘‘ لکھ ڈالا۔ فاضل مضمون نگار سے کون پوچھے کہ یہ کیا ہے؟ یہ دراصل ’’بے ...

مزید پڑھیں »